دفتر، عملہ نہ سیکرٹری، پنجاب بھر میں بلدیاتی نظام تباہ، یونین کونسلیں ہوامیں معلق

  دفتر، عملہ نہ سیکرٹری، پنجاب بھر میں بلدیاتی نظام تباہ، یونین کونسلیں ...

  

لاہور(میاں اشفاق انجم سے)30اپریل 2020ء سے یونین کونسل کے نظام کی خاتمے کے بعد پنجاب بھر کے 36اضلاع میں بلدیاتی نظام شدید بحران کا شکار، تین تین چار چار یونین کونسل کو یکجا کرکے فیلڈ آفس قائم کرنے کا عمل سٹاف کی کمی کی وجہ سے مشکلات کا شکار، سیکرٹری یونین کونسل کا عہدہ ختم کرکے رجسٹریشن کلرک کی تعیناتی نہ ہونے کی وجہ سے لاہور سمیت پنجاب بھر میں طلاق کے سینکڑوں کیس التوا کا شکار، یونین کونسل ختم کرنے کے بعد گزشتہ 3ماہ سے سیکرٹری اور دیگر سٹاف تنخواہوں سے محروم، لاہور سمیت پنجاب کے بڑے شہروں میں اپنے دفتر نہ رکھنے والی یونین کونسل بجٹ کی کمی کی وجہ سے فعال نہ ہو سکیں۔ لاہور سمیت پنجاب کی سینکڑوں یونین کونسل نئے بلدیاتی نظام کے تحت تشکیل پانے والے فیلڈ آفس رجسٹریشن کلرک کے منتظر، لاہور سمیت پنجاب بھر کی ختم ہونے والی یونین کونسل کا سٹاف نئے بلدیاتی نظام سے ناواقف ہیں۔لاہور کی 275یونین کونسل میں ڈیڑھ سو کے قریب یونین کونسل کی مرجنگ اب تک مکمل ہو سکی ہے۔ باقی یونین کونسل ایڈمنسٹریٹر سمیت رجسٹریشن کلرک کے ساتھ دفتر کی منتظر ہیں۔طلاق سمیت دیگر معاملات بھی تعطل کا شکار ہونے کی وجہ سے بحران بڑھ رہا ہے،3ماہ سے ثمری منظوری کے لئے وزیراعلیٰ کے پاس پڑی ہے۔

یونین کون

مزید :

صفحہ اول -