غیر قانونی مویشی منڈیوں کیخلاف کریک ڈاؤن کا فیصلہ

  غیر قانونی مویشی منڈیوں کیخلاف کریک ڈاؤن کا فیصلہ

  

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر،مانیٹرنگ ڈیسک) عیدا لضحیٰ پر ایس او پیز کے حوالے سے نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر کا کہنا ہے غیر قانونی مویشی منڈیوں کیخلاف کریک ڈاؤن کئے جا ئیں گے، کسی بھی غیر قانونی مویشی منڈی کو قائم کرنے یا چلانے کی ہر گز اجازت نہیں ہوگی، عید پر اجتماعات سے گریز کیا جائے، تمام تفریخی مقامات مکمل بند رہیں گے۔ہیلتھ گائیڈ لائنز پر عملدرآمد کیلئے وفاق، صوبوں، آزاد کشمیر اور گلگت بلتستان میں انتظامیہ نے بڑے پیمانے پر کریک ڈاؤن کا فیصلہ کر لیا، منظور شدہ مویشی منڈیوں میں ضابطہ اخلاق کی عملداری کیلئے تمام انتظامیہ متحرک ہو گئی۔این سی او سی کے مطابق ملک بھر میں قائم مویشی منڈیوں میں ہیلتھ گائیڈ لائنز کی خلاف ورزیوں کی رپورٹس مل رہی ہیں، عوام کی صحت و حفاظت او لین ترجیح ہے، حفظانِ صحت کے اْصولوں اور کورونا کیخلاف بنائی گئی حفاظتی تدابیر کو اپنانے سے ہی وَبا پر قابو پایا جا سکتا ہے۔ تمام صوبوں آزاد جموں و کشمیر، گلگت بلتستان اور اسلام آباد میں خصوصی مانیٹرنگ ٹیمیں ایس او پیز پر عملدرآمد کو یقینی بنائیں گی، خلاف ورزیوں کی صورت میں جْرمانے اور مویشی منڈیوں کو بند کیا جا سکے گا، فیس ماسک اور سماجی فاصلوں کو برقرار رکھنا بہت ضروری ہے، اگر ان احتیاطی تدابیر پر عملدرآمد نہ کیا گیا تو وَبا پر قابو پانا مشکل ہوگا، مویشی منڈیوں میں اوقات کار کی پابندی ایک مخصوص تعداد کی انٹری اور ہیلتھ گا ئیڈ لائن پر عملدرآمد کرایا جائیگا۔ نیشنل کمانڈ ایند آپریشن سینٹر کے مطابق عید پر اجتماعات سے گریز کرنے کی ہدایت کی ہے، عید پر تمام تفریخی مقامات مکمل بند رہیں گے، عوام سے اپیل ہے وہ بازاروں اور عید پر تفریحی مقامات پر جانے سے گریز کریں، انفرادی حفاظت اجتماعی صحت اور حفاظت کی ضمانت ہے، عوام کے تعاون سے ہی کرونا پر قابو پایا جا سکتا ہے۔

این سی او سی

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر، مانیٹرنگ ڈیسک،نیوز ایجنسیاں)ملک میں کورونا سے مزید 22 افراد جاں بحق ہوگئے جس کے بعد ہلاکتوں کی تعداد 5778 ہوگئی جبکہ 1478 نئے کیسز سامنے آنے کے بعد مریضوں کی تعداد 271490 تک جاپہنچی۔اب تک پنجاب میں 2105، سندھ میں 2110 اور خیبر پختونخوا میں 1170 افراد جاں بحق ہو چکے ہیں جبکہ اسلام آباد میں 162، بلوچستان میں 136، آزاد کشمیر میں 49 اور گلگت بلتستان میں 46 افراد کا انتقال ہوا ہے۔بروز جمعہ ملک بھر سے کورونا کے مزید 1478 کیسز اور 22 ہلاکتیں رپورٹ ہوئیں جن میں سندھ سے 917 کیسز اور 14 اموات، پنجاب سے 294 کیسز 5 ہلاکتیں، خیبر پختونخوا سے 173 کیسز اور ایک ہلاکت، اسلام آباد 44 کیسز، گلگت 22 کیسز ایک ہلاکت اور آزاد کشمیر سے 28 کیسز ایک ہلاکت سامنے آئی ہے۔پنجاب سے کورونا کے 294 کیسز اور 5 ہلاکتیں رپورٹ ہوئی ہیں جن کی تصدیق سرکاری پورٹل پر کی گئی۔سرکاری پورٹل کے مطابق پنجاب میں کورونا کے مریضوں کی کْل تعداد 91423 اور ہلاکتیں 2105 ہو چکی ہیں۔صوبے میں اب تک کورونا کے 68439 مریض صحتیاب بھی ہوچکے ہیں۔وفاقی دارالحکومت سے کورونا کے مزید 44 کیسز سامنے آئے ہیں جو سرکاری پورٹل پر رپورٹ ہوئے۔پورٹل کے مطابق اسلام آباد میں کورونا کے مریضوں کی کل تعداد 14766 اور ہلاکتیں 161ہو گئی ہیں۔اس کے علاوہ شہر میں کورونا سے صحتیاب ہونیوالوں کی تعداد 12023 ہوگئی ہے۔گلگت بلتستان سے کورونا کے مزید 22 کیسز ایک ہلاکت سامنے آئی جن کی تصدیق سرکاری پورٹل پر کی گئی۔پورٹل کے مطابق گلگت میں کورونا کے مریضوں کی کل تعداد 1918 ہوگئی جبکہ وہاں اموات کی تعداد 46 ہے۔گلگت میں کورونا سے صحتیاب ہونیوالوں کی تعداد 1533 ہے۔آزاد کشمیر سے بھی کورونا کے مزید 28 کیسز اور ایک ہلاکت رپورٹ ہوئی۔آزاد کشمیر میں اب تک مجموعی طور پر 1989 افراد میں کورونا وائرس کی تصدیق ہوچکی ہے جبکہ وہاں اموات کی تعداد 49 ہوگئی ہے۔آزاد کشمیر میں اب تک کورونا سے 1361 افراد صحتیاب ہوچکے ہیں۔

مزید :

صفحہ اول -