صدارتی محل سے غیر قانونی آرڈیننس جاری ہو رہے ہیں،پیپلز پارٹی

صدارتی محل سے غیر قانونی آرڈیننس جاری ہو رہے ہیں،پیپلز پارٹی

  

اسلام آباد(آئی این پی)پیپلز پارٹی کی مرکزی رہنماؤں نے کہا ہے کہ پچیس جولائی کو پاکستان کی تاریخ میں بدترین پولیٹیکل انجینئرنگ کرکے سلیکشن کی گئی جن کو چیئرمین پیپلز پارٹی نے اپنی اسمبلی کی پہلی تقریر میں ہی سلیکٹڈ وزیراعظم کہہ دیا تھا، صدارتی محل غیر قانونی آرڈیننس اور نوٹیفکیشن جاری کررہا ہے،ان خیالات کااظہار پیپلز پارٹی کی مرکزی سیکرٹری اطلاعات ڈاکٹر نفیسہ شاہ، ڈپٹی سیکرٹری اطلاعات پلوشہ خان نے مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا۔ نفیسہ شاہ نے کہا کہ حکومت اب کلھبوشن بچاؤ اور بھگاؤ آرڈیننس لے کر آرہی ہے۔نیب کے ذریعے پارلیمانی کمیٹیوں کی انجینئرنگ ہورہی ہے اوراب تو عدلیہ کی طرف سے بھی پولیٹیکل انجینئرنگ اور سلیکٹڈ کے الفاظ استعمال کئے جارہے ہیں۔پلوشہ خان نے کہا کہ زلفی بخاری دبئی میں جاکر معاہدے کررہے ہیں ان کو کس نے اجازت دی اور کس طرح غیر آئینی طریقے سے یہ معاملات چلائے جارہے ہیں۔ نیب اور نیازی گٹھ جوڑ واضح ہوچکا ہے کہ حکومتی اراکین کو تحفظ مل رہا ہے جبکہ اپوزیشن لوگوں کو انتقام کا نشانہ بنایا جارہا ہے۔

پی پی رہنما

مزید :

صفحہ آخر -