شیشہ اسموکنگ کیخلاف قانون سازی ہوگی،ویر جی کوہلی

    شیشہ اسموکنگ کیخلاف قانون سازی ہوگی،ویر جی کوہلی

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر)سوسائٹی برائے تحفظ حقوق اطفال (اسپارک) کے زیر اہتمام خصوصی SOPمیں ایک سیشن بعنوان "تمبا کو نوشی سے متعلق قانون کیا کہتا ہے "مقامی ہوٹل میں منعقد ہوا۔ جس میں سول سوسائٹی کے نمائندوں،معاون خصوصی وزیر اعلیٰ سندھ برائے انسانی حقوق ویر جی کوہلی ایڈیشنل سیکریٹری لاء ڈپارٹمنٹ طاہرہ پیچو ہو، کاشف بجیر اور پاکستان فٹبال ٹیم کے کپتان صدام حسین،سماجی کارکن کرن زبیر، حارث جدون، معروف صحافی منیر عقیل انصاری، ضیاء قریشی، عبدالصمد تاجی و دیگر نے اظہار خیال کیا۔ سیشن کی ابتداء میں میڈیا منیجر اسپارک محمد کاشف مرزا نے ابتدائی بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ (اسپارک) کئی دہائیوں سے تمبا کو نوشی کے خلاف اپنی جدو جہد جاری رکھے ہوئے ہے اسموک فری کراچی کے تحت ہم نے جیلوں خصوصاً بچہ جیل میں بھی آگہی مہم چلائی۔ ہم پالیسی سازوں سے رابطے میں ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ آج ملک میں 22ملین لوگ سگریٹ پیتے ہیں اور روزانہ 1200سے زائد نئے نوجوان تمبا کو نوشی شروع کرتے ہیں۔ تمباکو نوشی کی وجہ سے سالانہ ایک لاکھ ساٹھ ہزار سے زائد اموات ہوتی ہیں۔ جو نہایت تشویشناک ہیں اس ضمن میں کئی قانون بھی بنے مگر اچھی طرح عمل پیرا نہ ہونے کی وجہ سے وہ فوائد حاصل نہ کر سکے۔ ہمیں اپنے رویوں میں تبدیلی لانا ہوگی۔

مزید :

صفحہ آخر -