تحفظ بنیاد اسلام بل کی منظوری حکومت کا اچھا فیصلہ ہے،مرزا ایوب بیگ

تحفظ بنیاد اسلام بل کی منظوری حکومت کا اچھا فیصلہ ہے،مرزا ایوب بیگ

  

لاہور(نمائندہ خصوصی) پنجاب اسمبلی کا تحفظ ِ بنیادِ اسلام بل 2020ء پاس کرنا قابل صد تحسین ہے یہ بات ترجمانِ تنظیم اسلامی مرزا ایوب بیگ نے ایک بیان میں کہی۔ انہوں نے کہا کہ اِس قانون کے مطابق DGPR کو اختیار حاصل ہو گا کہ وہ مارکیٹ میں جہاں کہیں بھی خلافِ اسلام مواد موجود ہو اُسے ضبط کر کے فوجداری مقدمہ درج کرائے یہ قانون سرکاری و نجی تعلیمی اداروں پر بھی لاگو ہوگا۔

۔ علاوہ ازیں درآمد شدہ کتب کو بھی اِس قانون کے تحت چیک کیا جائے گا۔ اِس قانون کے تحت ختم نبوت اور اسلامی شعائر کا تحفظ کیا گیا ہے۔انہوں نے کہا ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ تحفظ ِ بنیادِاسلام کے ساتھ ساتھ اب نفاذِ اسلام کی طرف بھی حکومت عملی پیش رفت کا مظاہرہ کرے۔

 اُنھوں نے وفاقی وزیر برائے سائنس اور ٹیکنالوجی فواد چودھری کی ایک انٹرویو میں کہی ہوئی اِس بات کی شدید مذمت کی کہ علماء اِس بات کو سمجھنے کی کوشش کریں کہ سائنس اور ٹیکنالوجی کا مذہب سے کوئی تعلق نہیں۔ اُنھوں نے کہا کہ ایک مسلمان کا ایسی بات کہنا ظاہر کرتا ہے کہ وہ بدقسمتی سے قرآنِ پاک کے سرسری مطالعہ سے بھی محروم رہا ہے۔ وگرنہ اُنھیں معلوم ہوتا کہ سائنس اور ٹیکنالوجی کی ترقی سے کس طرح قرآن پاک کی حقانیت واضح ہوئی ہے۔ اُنھوں نے کہا کہ موصوف کو علم ہونا چاہیے کہ قرآن پاک دینی اور دنیوی علوم کا احاطہ کرتا ہے۔ بڑے بڑے غیر مسلم سائنس دانوں نے سائنس اور ٹیکنالوجی کے حوالے سے قرآن پاک کی آیات مبارکہ کواپنی تحریرو تقریر میں بطور ریفرنس استعمال کیا ہے۔اُنھوں نے کہا کہ فواد چودھری کی اِس گفتگو سے ہر اچھے مسلمان کا سر شرم سے جھک گیا ہے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -