ڈاکٹر اور انکے بیٹے کو قتل کرنے والا اشتہاری ملزم گرفتار

  ڈاکٹر اور انکے بیٹے کو قتل کرنے والا اشتہاری ملزم گرفتار

  

صوابی(بیورورپورٹ)صوابی پولیس نے ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال صوابی کے ڈینٹل سرجن ڈاکٹر شیر ہاشم اور ان کے بیٹے طارق اقبال کو قتل کرنے والے پندرہ سال سے پولیس کو مطلوب مجرم اشتہاری ریحان شاہ کو گرفتار کر لیا۔ ڈی پی او آفس سے جاری پریس ریلیز کے مطابق ریحان شاہ نے چھبیس مارچ 2005کو اس وقت ڈاکٹر شیر ہاشم اور انکے بیٹوں پر فائرنگ شروع کر دی جب وہ موٹر کار میں ڈیوٹی انجام دینے کے لئے صوابی آرہے تھے۔ وجہ قتل تنازغہ راستہ بیان کی گئی تھی۔ اس سلسلے میں ڈی پی او عمران شاہد کی خصوصی ہدایت پر قائم مقام ڈی ایس پی صوابی نورالامین خان کی قیادت میں ایس ایچ او صوابی سب انسپکٹر فاروق خان نے مخبر خاص کی اطلاع پر کارروائی کرتے ہوئے پولیس کو 15 سالوں سے دوہرے قتل میں مطلوب اشتہاری ریحان شاہ ولد حبیب شاہ سکنہ مینہ بانڈہ سلیم خان کو گرفتار کیا گیا۔اس دوران موٹر کار نمبری SB-1215سوزوکی میں ڈاکٹر شیر ہاشم اپنے بیٹوں کے ہمراہ ڈیوٹی کے لیے صوابی آرہے تھے کہ تھاک میں بیٹھے تھے نے اسلحہ آتشین کلاشنکوف سے ملز م ریحان نے موٹرکار پر اندھا دھند فائرنگ کھول دی جسکے نتیجے میں ڈرائیور سائیڈ ڈاکٹر شیر ہاشم اور بائیں سائیڈ بیٹا طارق اقبال لگ کر موقع پر جاں بحق ہوئے۔جبکہ دوسرا بیٹاعمران اقبال معجزانہ طور بچ گیا تھا۔ملزم 15 سال مفرور رہا اور آخر کار جیل کی سلاحوں کے پیچھے زندگی بسر کرنے لگا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -