پریکٹس میچ میں قومی بیٹنگ لائن کی ناکامی نے خطرے کی گھنٹی بجا دی، پوری ٹیم اپنے ہی باﺅلرز کے سامنے کتنے رنز پر ڈھیر ہو گئی؟ ماہرین بھی حیران پریشان رہ گئے

پریکٹس میچ میں قومی بیٹنگ لائن کی ناکامی نے خطرے کی گھنٹی بجا دی، پوری ٹیم ...
پریکٹس میچ میں قومی بیٹنگ لائن کی ناکامی نے خطرے کی گھنٹی بجا دی، پوری ٹیم اپنے ہی باﺅلرز کے سامنے کتنے رنز پر ڈھیر ہو گئی؟ ماہرین بھی حیران پریشان رہ گئے

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) انگلینڈ میں موجود قومی ٹیم کے پریکٹس میچ میں بیٹنگ کی ناکامی نے خطرے کی گھنٹی بجا دی ہے اور ٹیسٹ ٹیم کے پاکستانی امیدوار اپنے ہی باﺅلرز کے سامنے ریت کی دیوار ثابت ہوئے،گرین الیون صرف 113 رنز پر ڈھیر ہو گئی، 4 روزہ انٹر اسکواڈ پریکٹس میچ میں بابر اعظم 32، محمد رضوان 18 اور شاداب خان 11رنز بنا سکے جبکہ عابد علی، شان مسعود، اظہر علی اور اسد شفیق دوہرا ہندسہ بھی عبور کرنے میں ناکام رہے۔

تفصیلات کے مطابق ٹیم گرین میں کم و بیش ان تمام کرکٹرز کو شامل کیا گیا جو انگلینڈ کے خلاف پہلا ٹیسٹ کھیلیں گے،پلیئنگ الیون میں عابد علی، شان مسعود، اظہر علی(کپتان)، بابر اعظم، اسد شفیق، محمد رضوان، شاداب خان، یاسر شاہ، شاہین شاہ آفریدی اور محمد عباس کو جگہ ملی جبکہ ٹیم وائٹ میں وہ تمام کھلاڑی شامل تھے جنہیں دوسرا انتخاب قرار دیا جا سکتا ہے، اس الیون میں فخر زمان، امام الحق، حیدر علی، افتخار احمد، فواد عالم، سرفراز احمد(کپتان)، سہیل خان، فہیم اشرف، کاشف بھٹی، عثمان شنواری اور عمران خان سینئر کو جگہ ملی لیکن حیرت کی بات یہ ہے کہ ”بی“ ٹیم کی باﺅلنگ نے ممکنہ ٹیسٹ سائیڈ کی ٹاپ آرڈر کے پرخچے اڑا دئیے۔

گرین ٹیم نے پہلی وکٹ تیسرے اوور میں ہی گنوا دی، سہیل خان نے عابد علی کو وکٹوں کے پیچھے موجود سرفراز احمد کی مدد سے دھر لیا، فاسٹ باﺅلر نے اپنے اگلے اوور میں شان مسعود(9) کو ایل بی ڈبلیو کر دیا، سہیل خان نے تیسرا شکار کرنے میں بھی زیادہ دیر نہیں لگائی اور اس بار کپتان اظہرعلی(6) کو وکٹوں کی جانب بڑھتی گیند پیڈ پر لگنے کی سزا ملی، صرف 23 رنز کے سفر میں 3 وکٹیں گرنے کے بعد بھی بیٹنگ کو استحکام حاصل نہ ہوا، بابر اعظم قدرے اعتماد سے کھیلے مگر اسد شفیق صرف9 رنز بنا کر ساتھ چھوڑ گئے، فہیم اشرف نے وکٹ کیلئے افتخار احمد کا سہارا لیا، لنچ پر ٹوٹل 4 وکٹ پر 56 تھا، وقفے کے بعد بھی بیٹنگ لائن کی تباہ کاری نہ رکی، عمران خان سینئر نے بابر اعظم (32) کا شکار کرلیا جن کی معاونت سرفرازاحمد نے کی۔

سہیل خان نے شاداب خان کو11 رنز پر بولڈ کر دیا، فہیم اشرف نے محمد رضوان 18 کے انفرادی سکور پر پویلین کی راہ دکھائی، سہیل خان نے شاہین شاہ آفریدی (3) کو ایل بی ڈبلیو کر دیا،نسیم شاہ ابھی4 رنز بنا پائے تھے کہ فواد عالم کی ڈائریکٹ تھرو پر رن آﺅٹ ہو گئے، محمد عباس(2) نے باﺅلر کاشف بھٹی کو ہی کیچ دیدیا اور یوں پوری ٹیم صرف 113 رنز پر ڈھیر ہو گئی۔

سہیل خان نے 37 رنز دے کر 5 شکار کئے، فہیم اشرف نے صرف 16 رنز کے بدلے2 وکٹیں حاصل کیں، عمران خان سینئر اور کاشف بھٹی نے ایک، ایک کھلاڑی کو آﺅٹ کیا، جواب میں وائٹ ٹیم نے فخر زمان(22) کی وکٹ 41 کے مجموعی سکور پر گنوائی، انہیں نسیم شاہ نے ایل بی ڈبلیو کیا، امام الحق 19 رنز بنانے کے بعد نسیم شاہ کی گیند بائیں ہاتھ پر لگنے سے زخمی ہو گئے۔ ان کو میدان سے باہر جانا پڑا، افتخار احمد نے فواد عالم نے ہمراہ ٹوٹل77 پہنچایا تھا کہ یاسر شاہ کی گیند پر محمد رضوان کے ہاتھوں سٹمپ ہو گئے، دن کا کھیل ختم ہونے تک فواد عالم 18 اور سرفراز احمد 6 رنز پر کھیل رہے تھے،وائٹ ٹیم کا مجموعہ 3 وکٹ پر 88 تھا۔

مزید :

کھیل -