سی ویو کراچی پر پھنسے ہوئے بحری جہاز کا معاملہ ، وفاقی وزیر علی زیدی بھی میدان میں آ گئے

سی ویو کراچی پر پھنسے ہوئے بحری جہاز کا معاملہ ، وفاقی وزیر علی زیدی بھی ...
سی ویو کراچی پر پھنسے ہوئے بحری جہاز کا معاملہ ، وفاقی وزیر علی زیدی بھی میدان میں آ گئے

  

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن) وفاقی وزیر بحری امور علی زیدی نے کہا ہے کہ سی ویو کراچی پر پھنسے ہوئے جہاز کو نکالنے کے لیے ٹیمیں پہنچ رہی ہیں، بحری جہاز سے تیل کے رساؤ سے بچنے کے انتظامات کرلیے ہیں،کورونا، تیزبخار اور دیگر علامات کے باعث میں نے خود کو محدود توکرلیاہے تاہم ابھی زندہ ہوں اور پھنسے ہوئے جہازکو نکالنے کے تمام منصوبوں کی نگرانی کررہاہوں،سب سےالتماس ہے کہ بعض خود ساختہ شپنگ ایکسپرٹس کی جانب سے میڈیا پر پھیلائی جانے والے تعفن پر اپناوقت برباد نہ کریں۔

نجی ٹی وی کے مطابق سی ویو پرپھنسے جہازکی صورتحال پروفاقی وزیر علی زیدی نے مزید کہا کہ جہاز کے کپتان نے مدد کے لیے کال نہیں دی تھی،جہاز عملے کی تبدیلی کے لیے پاکستانی سمندری حدود میں آیا،بحری جہاز کا انجن خراب تھا، خراب موسم کی وجہ سے کم پانی کی طرف مڑا، کراچی بندرگاہ پر رابطے سے قبل ہی جہاز ساحل تک پہنچ چکا تھا، بحری جہاز نکالنے کے لیے آنے والے اخراجات اور نقصان کا ازالہ جہاز کا مالک کرے گا۔انہوں نے کہا کہ سمندری جہاز پانی میں آدھے میٹر کی سطح پر موجود ہے، سمندری جہاز کو نکالنے کے لیے کم از کم 5 میٹر کی سطح چاہیے ہوتی ہے،ساحل پر پھنسے جہاز کے لیے نیشنل میری ٹائم ڈیزاسٹر کنٹیجنسی پلان فعال کردیا گیا ہے۔

وفاقی وزیرنے کہاکہ ہم ایک بندرگاہی ریاست ہیں اور آئی ایم او ریگولیشنز کے پابندہیں، ایم ٹی ہینگ ٹونگ 77 کے کپتان نے ابھی تک ایس او ایس   کال نہیں دی، اسکا واضح مطلب یہ ہے کہ ہم قطعا امدادی کارروائی شروع نہیں کرسکتے، آئی ایم او ریگولیشنز کے تحت امدادی کارروائیوں کی ذمہ داری اور لاگت براہِ راست مالک پر عائد ہوتی ہے۔

انہوں نے کہاکہ جہاز کے مالک نے بحریہ میرین سروسز کو پاکستان میں اپنا نمائندہ مقرر کیا ہے، ہمارے ٹگز کے ساتھ ریسکیو ٹگز جلد پہنچ جائیں گے اور آپریشن کا آغاز کیا جائیگا، آپریشن کی نگرانی کیلئے مالک نے چین سے ایک ماہر بھی بلوایا ہے،امدادی آپریشن سمندر کے مد و جزر ملحوظِ خاطر رکھ کر کیا جاتا ہے، یہ مد و جزر صبح 11 بجے یا رات 11 بجے ہی سازگار ہوگا،بندرگاہ کے محافظین اورکے پی ٹی میرین پولیوشن کنٹرول 24 گھنٹے صورتحال پرنظر رکھے ہوئے ہیں،کسی بھی ہنگامی صورتحال کیلئے پی ایم ایس اے کی کشتی ہمہ وقت تیار ہے۔

وفاقی وزیرعلی زیدی نے کہا کہ میں پہلے دن سے واضح کر رہا ہوں کہ کسی کو اپنی بندرگاہوں سے ناجائز فائدہ نہیں اٹھانے دیں گے، تمام دستیاب معلومات جمع کرنے کے بعد میں نے حقائق اور واقعے کے ذمہ داروں کے تعین کیلئے ایک انکوائری کمیٹی قائم کردی ہے،گزشتہ ادوارمیں اس وقت کے وزراءاور بندر گاہوں پرمقرر کردہ حکام نے مٹھی بھر ڈالروں کے عوض ہماری ساحلی پٹی تباہ و برباد کی،اپنے میڈیا وسماجی میڈیا کے زعماءسے میری دوبارہ التماس ہے کہ پرسکون ہو جائیں اوربھروسہ رکھیں،ہم قانون کی پیروی کریں گے اور انشااللہ جہاز کودوبارہ سمندرمیں اتاردینگے، مجھے قوی امید ہے کہ ہم آئی ایم او ریگولیشنز اور انٹرنیشنل میری ٹائم لاز کی روشنی میں اس معاملے سے پیشہ وارانہ طور پر نمٹ لیں گے۔

مزید :

علاقائی -سندھ -کراچی -