گورنر کے تقرر کیخلاف درخواست ، دلائل کیلئے چودھری سرور کے وکیل طلب

گورنر کے تقرر کیخلاف درخواست ، دلائل کیلئے چودھری سرور کے وکیل طلب

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائیکورٹ جسٹس منصور علی شاہ نے گورنر پنجاب کی تعیناتی کے خلاف درخواست میں چودھری محمد سرور کے وکیل کو دلائل کیلئے طلب کر لیا ہے ۔ درخواست گزار بیرسٹر جاوید اقبال جعفری نے عدالت کو بتایا کہ وفاقی حکومت نے میرٹ سے ہٹ کر چودھری محمد سرورکو گورنر پنجاب تعینات کیا جبکہ وہ برطانوی شہریت رکھتے تھے اور انہوں نے پاکستان آنے سے قبل شہریت چھوڑ دی لیکن ان کے اہل خانہ نے ابھی تک برطانوی شہریت نہیں چھوڑی، انہوں نے عدالت کو مزید بتایا کہ گورنر پنجاب کی تعلیمی اسناد بھی جعلی ہیں جس کی بنیاد پر وہ آئین کے آرٹیکل 62اور 63سپر پورا نہیں اترتے، انہوں نے استدعا کی چودھری محمد سرور کی بطور گورنر پنجاب تعیناتی کالعدم قرار دیا جائے، عدالت کو بتایا گیا کہ گورنر پنجاب کی تعیناتی کیخلاف درخواست ایک برس سے زیر التواءہے جس میں ابھی وفاقی اور صوبائی حکومت نے جواب داخل نہیں کرایا، سرکاری وکلا کی طرف سے عدالت کو بتایا گیا کہ گورنر پنجاب چودھری محمد سرور نے اشتر اوصاف ایڈووکیٹ کو اپنا وکیل مقررکیا ہے، وہ اس درخواست میں دلائل دیں گے جس پر عدالت نے گورنر پنجاب کی نااہلی کیلئے دائر درخواست پر مزید کارروائی 18ستمبر تک ملتوی کرتے ہوئے چودھری محمد سرور کے وکیل کو دلائل کیلئے طلب کر لیا۔
 گورنر

مزید :

صفحہ آخر -