طاہر چودھری پر پولیس کا وحشیانہ تشدد، ملتان کارڈیالوجی منتقل

طاہر چودھری پر پولیس کا وحشیانہ تشدد، ملتان کارڈیالوجی منتقل
طاہر چودھری پر پولیس کا وحشیانہ تشدد، ملتان کارڈیالوجی منتقل

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

ملتان (مانیٹرنگ ڈیسک) گلگشت پولیس کا کیبل آپریٹرز ایسوسی ایشن آف پاکستان (کیب) پنجاب کے سیکرٹری جنرل چودھری طاہر جاوید پر بیہمانہ تشدد، حالت غیر ہوگئی۔ عدالتی احکامات کے باوجود 6 گھنٹے تاخیر سے ہسپتال لے جایا گیا جہاں پولیس ڈاکٹروں پر جلدی علاج معالجے کے بعد چودھری طاہر جاوید کو ڈسچارج کرنے کیلئے دباﺅ ڈالتی رہی، اطلاع ملتے ہی کیبل آپریٹرز نشتر ہسپتال پہنچ گئے اور اپنے قائد کی عیادت کی، ای سی جی رپورٹ میں دل کی تکلیف ثابت ہونے پر انہیں کارڈیالوجی سنٹر منتقل کردیا گیا جہاں انتہائی نگہداشت وارڈ میں زیر علاج ہیں۔ تفصیلات کے مطابق پولیس تھانہ گل گشت نے کیبل آپریٹرز ایسوسی ایشن آف پاکستان (کیپ) پنجاب کے جنرل سیکرٹری چودھری طاہر جاوید کو 3 روزہ ریمانڈ پر لیا ہوا ہے۔ پہلے ہی دن پولیس کے وحشیانہ تشدد کے باعث ان کی حالت بگڑ گئی جس پر اہل خانہ نے عدالت سے رجوع کیا تو عدالت نے گزشتہ روز 11 بجے پولیس کو ہدایت دی کہ چودھری طاہر جاوید کو فوری طور پر ہسپتال منتقل کیا جائے مگر پولیس نے عدالتی احکامات کو بالائے طاق رکھتے ہوئے مزید بگڑنے پر 6 گھنٹے تاخیر کے بعد 4 بج کر 30 منٹ پر نشتر ہسپتال منتقل کیا جہاں پولیس افسران ڈاکٹروں پر دباﺅ ڈالتے رہے کہ چودھری طاہر جاوید کو علاج کے بعد فوری ڈسچارج کیا جائے مگر چودھری طاہر جاوید کی حالت کو دیکھتے ہوئے ڈاکٹروں نے انہیں داخل کرلیا اور مکمل میڈیکل ٹیسٹ کرائے ،ای سی جی رپورٹ میں دل کی تکلیف سامنے آنے پر نشتر انتظامیہ نے رات گئے چودھری طاہر جاوید کو کارڈیالوجی منتقل کردیا۔ حالت سیریس ہونے کے باعث انہیں انتہائی نگہداشت کے وارڈ میں داخل کرلیا گیا ہے۔ قبل ازیں کیبل آپریٹرز اطلاع ملنے پر اپنے قائد کی عیادت کرنے نشتر ہسپتال پہنچے جہاں انہوں نے پولیس کی جانب سے کئے جانے والے وحشیانہ تشدد پر احتجاج کیا۔ کیبل آپریٹرز ایسوسی ایشن پاکستان کے چیئرمین خالد آرائیں اور دیگر عہدیداران نے طاہر چودھری پر پولیس کے وحشیانہ تشدد پر احتجاج کیا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ طاہر چودھری پر تشدد جیو ٹی وی اور پیمرا کے ایماءپر کیا گیا ہے، طاہر چودھری پر تشدد کا مقصد پاکستان بھر کے کیبل آپریٹرز کو ہراساں کرنا ہے تاکہ پیمرا کے غیر قانونی اقدامات پر عمل کرنے کے لئے کیبل آپریٹرز کو مجبور کیا جاسکے،طاہر چودھری کسی کالعدم تنظیم کا عہدیدار نہیں بلکہ غریب کیبل آپریٹر کا لیڈر ہے۔ انہوں نے کہا کہ طاہر چودھری کو کچھ ہوا تو ذمہ دار پنجاب حکومت ہوگی۔انہوں نے وزیراعلیٰ پنجاب سے گزارش کی کہ طاہر چودھری پر تشدد کا فی الفور نوٹس لے کر تحقیقات کرائی جائے اور انہیں رہا کیا جائے۔

مزید :

قومی -