امریکی خصوصی فورس بغداد پہنچ گئی

امریکی خصوصی فورس بغداد پہنچ گئی
امریکی خصوصی فورس بغداد پہنچ گئی

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

بغداد (مانیٹرنگ ڈیسک) عراق میں شدت پسند گروپ الادولتہ الاسلامی فی العراق والشام (داعش) نے ملک کی مغربی سرحد پر قبضہ کرلیا ہے اور دارالحکومت سے جنگجوﺅں کا فاصلہ صرف 44 میل رہ گیا ہے۔ امریکہ نے عراقی بدامنی اور خانہ جنگی کا فائدہ اٹھاتے ہوئے مداخلت کا نیا منصوبہ تیار کرلیا ہے اور ابتدائی طور پر جنگی مشیروں کے روپ میں اپنے خصوصی اہلکاروں کو عراقی دارالحکومت میں داخل کردیا ہے۔ امریکی ڈیفنس ڈیپارٹمنٹ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ 300 جنگی مشیروں میں سے تقریباً نصف بغداد پہنچ چکے ہیں۔ داعش کے جنگوﺅں نے شمالی عراق پر قبضہ کرلیا ہے اور مغربی سرحد پر بھی قبضہ کرتے ہوئے عراق کا شام اور اردن کے ساتھ رابطہ منقطع کردیا ہے اور اہم شہر قلوجہ پر قبضے کیلئے جنگ جاری ہے۔ امریکی حکام یہ امید ظاہر کررہے ہیں کہ عراق میں ایک ہفتے تک نئی حکومت بن جائے گی جس کی وجہ سے عراق میں مداخلت اور کنٹرول میں بہتری آجائیگی، امریکی سینیٹر لنڈسے گراہم کا کہنا تھا کہ وہ عراق میں امریکہ کی ایڈوانس حکومت عملی کی حمایت کرتے ہیں۔ پینٹا گون میں ہونے والی ایک میٹنگ میں امریکی بحریہ کے افسر جان کربی نے بتایا کہ عراق میں بھیجے جانے والے اہلکاروں میں سپیشل فورس کی دو ٹیمیں، 90 مشیر، انٹیلیجنس، تجزیہ کار، کمانڈو اور کچھ دیگر لوگ شامل ہوں گے، جبکہ سپیشل فورس کی چار مزید ٹیمیں اگلے کچھ دنوں میں بھیجی جائیں گی۔ کربی نے یہ بھی بتایا کہ عراقی دارالحکومت بغداد میں جوائنٹ آپریشن سنٹر بھی قائم کیا جائے گا۔