تین سے زیادہ بچوں کا شوق عورت کی جان بھی لے سکتا ہے

تین سے زیادہ بچوں کا شوق عورت کی جان بھی لے سکتا ہے
تین سے زیادہ بچوں کا شوق عورت کی جان بھی لے سکتا ہے
کیپشن: women

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

واشنگٹن (نیوز ڈیسک) آبادی میں تیزی سے اضافہ نہ صرف معاشی اور معاشرتی بدحالی اور تباہی کا باعث بنتا ہے بلکہ ایک تازہ تحقیق کے مطابق تین سے زیادہ بچے پیدا کرنے والی خواتین میں ہارٹ اٹیک کا خدشہ بھی دو گنا بڑھ جاتا ہے۔ امریکہ کی یونیورسٹی آف ٹیکساس کے سائنسدانوں نے 45 سال عمر کی 1644 خواتین میں حاملہ ہونے کی تعداد اور ہارٹ اٹیک میں تعلق کا مطالعہ کیا۔ نتائج سے معلوم ہوا کہ جو خواتین 4 یا اس سے زائد بچے پیدا کرچکی تھیں اُن میں دل کی بیماریوں اور خصوصاً ہارٹ اٹیک کا خدشہ دوگنا بڑھ چکا تھا۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ حمل کے دوران جسم میں نمایاں تبدیلیاں واقع ہوجاتی ہیں اور یہ عمل عورت کیلئے ایک امتحان ہوتا ہے۔ حمل کے دوران دل سے جسم کو منتقل ہونے والے خون کی مقدار دوگنا تک ہوجاتی ہے۔ جن خواتین کے ہاں چار یا اس سے زائد بچے پیدا ہوچکے تھے اُن کی خون کی نالیوں میں کیلشیم زیادہ جمع ہوچکا تھا اور خون کی نالیاں تنگ اور سخت ہوچکی تھیں۔ سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ خون کی نالیوں کی تنگی اور سختی کی وجہ سے دوران خون میں رکاوٹ پیدا ہوجاتی ہے اور ہارٹ اٹیک ہوجاتا ہے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -