روسی پولیس کی اشتہاری کو جہاز کے سامان میں گھسانے کی کوشش

روسی پولیس کی اشتہاری کو جہاز کے سامان میں گھسانے کی کوشش
روسی پولیس کی اشتہاری کو جہاز کے سامان میں گھسانے کی کوشش
کیپشن: russia

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

ماسکو (نیوز ڈیسک) روسی پولیس نے ضرورت سے زیادہ فرض شناسی کا مظاہرہ کرتے ہوئے ہسپتال میں بے ہوش پڑے ملزم کو گھسیٹ کر باہر نکال لیا اور پھر ایئرپورٹ پر ساری رات اسے ہتھکڑی لگا کر کرسی کے ساتھ باندھے رکھا جس سے اس کی موت ہوگئی۔ چھتیس سالہ سرگی کوز میکن پر الزام تھا کہ اس نے میئر کے الیکشن میں حصہ لینے والے ایک امیدوار کو قتل کروایا تھا۔ پولیس کو اطلاع موصول ہوئی کہ ملزم کو ایک ہسپتال میں منتقل کیا گیا ہے جہاں وہ کومے کی حالت میں پڑا ہے۔ فیڈور اور یوری نامی دو پولیس والے ہسپتال پہنچے اور سرگی کے سانس لینے والے اور ادویات فراہم کرنے والے آلات اتار پھینکے اور اسے گھسیٹتے ہوئے ہسپتال سے باہر لے آئے۔ ملزم کو متعلقہ تھانے منتقل کرنے کیلئے ایئرپورٹ لے جایا گیا۔ جہاں پولیس والوں نے ملزم کو یوٹائر ایئرلائن کے جہاز میں ڈالنے کی کوشش کی لیکن اس کی بے ہوشی کی وجہ سے ایئرلائن نے اجازت نہ دی۔ اس کے بعد پولیس والوں نے ایئرلائن سے گزارش کی کہ ملزم کو سامان قرار دے کر مسافروں کے سامان کے ساتھ لاد دیا جائے۔ ایئرلائن نے جب اس بات کی بھی اجازت نہ دی تو پولیس والوں نے بے ہوش ملزم کو ہی ہتھکڑی لگا کر کرسی کے ساتھ باندھ دیا اور ساری رات کسی دوسرے جہاز کے انتظار میں بیٹھے رہے، اسی دوران ملزم سانس بند ہوجانے کی وجہ سے ہلاک ہوگیا۔ واقع کی ویڈیو سامنے آنے کے باوجود پولیس والوں کا کہنا ہے کہ انہوں نے کوئی غلط کام نہیں کیا بلکہ قانون کے مطابق کارروائی کی ہے۔

مزید :

جرم و انصاف -