اپوزیشن بجٹ اجلاس میں مزاحمت پر ناکام رہی،اپوزیشن کے پاس اس بجٹ پر تنقید کے لئے کچھ تھا ہی نہیں:راجہ بشارت

اپوزیشن بجٹ اجلاس میں مزاحمت پر ناکام رہی،اپوزیشن کے پاس اس بجٹ پر تنقید کے ...
اپوزیشن بجٹ اجلاس میں مزاحمت پر ناکام رہی،اپوزیشن کے پاس اس بجٹ پر تنقید کے لئے کچھ تھا ہی نہیں:راجہ بشارت

  


لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن) وزیر قانون وبلدیات پنجاب راجہ بشارت نے کہا ہے کہ جس دن ہمارا بجٹ اجلاس شروع ہوا تو اپوزیشن نے چیلنج کیاتھا کہ بجٹ پاس نہیں ہونے دے گی لیکن ہم نے اس وقت ہی کہہ دیا تھا کہ ایوان میں حکومت کے پاس اکثریت ہے اوراسمبلی سے بجٹ بآسانی سے منظور ہوجائے گا، سب نے دیکھا کہ پنجاب اسمبلی کی تاریخ میں پہلی بارصرف ایک گھنٹہ کے دوران مطالبات زر منظور کر لیے گئے اور یہ بھی پہلی بار ہوا کہ اپوزیشن نے صرف تین مطالبات زر پر کٹوتی کی تحریکیں پیش کیں اور ان پر بحث کی۔

تفصیلات کے مطابق سرکاری ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے راجہ بشارت نے کہا کہ اپوزیشن بجٹ اجلاس میں مزاحمت پر ناکام رہی ہے کیونکہ یہ بجٹ عوامی امنگوں کا ترجمان ہے اوراپوزیشن کے پاس اس بجٹ پر تنقید کے لئے کچھ تھا ہی نہیں۔ انہوں نے کہا کہ ماضی میں اپوزیشن لیڈر بجٹ پر دو تین گھنٹے نہیں دو دو روز تک بولتے رہے،اس سے قوم نے مزید جان لیا کہ موجودہ اپوزیشن کا دھیان عوام کو ریلیف دینے یا ان کی بہتری کے لیے نہیں بلکہ اپنے مسائل کی طرف ہے۔راجہ بشارت نے کہا کہ پی ٹی آئی حکومت کا یہ پہلا بجٹ ہے جوسابقہ حکومت کی نااہلی کے باعث انتہائی مشکل حالات میں بنایا گیا ہے اور اپوزیشن نے اس پر بے جا شور بھی مچایا لیکن وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کے تدبر اور کابینہ کی موثر حکمت عملی کی وجہ سے ایوان میں خود غرض اپوزیشن کو منہ کی کھانا پڑی۔ انہوں نے کہا کہ انشاء للہ آنے والا وقت صوبہ میں مالی استحکام لائے گا اورعمران خان کی سادگی مہم کے مثبت نتائج سامنے آئیں گے۔

مزید : علاقائی /پنجاب /لاہور