ایک اور روشن چراغ بجھ گیا، استاد الاساتذہ، بانی شعبہ ابلاغیات جامعہ پنجاب پروفیسر مغیث الدین شیخ سپرد خاک

  ایک اور روشن چراغ بجھ گیا، استاد الاساتذہ، بانی شعبہ ابلاغیات جامعہ پنجاب ...

  

لاہور (سٹاف رپورٹر،لیڈی رپورٹر)ممتاز محقق، دانشور، تجزیہ کار،پنجاب یونیورسٹی کے سابق ڈین اور ادارہ علوم ابلاغیات کے ڈائریکٹر پروفیسر ڈاکٹر مغیث الدین شیخ کورونا وائرس کے باعث انتقال کر گئے، چند روز قبل انہیں کورونا وائرس پازیٹیو آیا جس کے بعد انہیں ڈاکٹر ہسپتال میں داخل کرایا گیا،طبیعت زیادہ ناساز ہونے پر انہیں وینٹی لیٹر پر منتقل کیا گیا،ان کی عمر 70برس تھی۔ان کی نماز جنازہ گزشتہ روز پنجاب یونیورسٹی کی گراؤنڈ میں وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر نیاز احمد اختر نے پڑھائی، جس میں پنجاب یونیورسٹی سمیت دیگر نجی درسگاہوں کے اساتذہ ممتاز صحافیوں، کالم نگاروں، مدیروں، اینکرزاور مرحوم کے شاگردوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔ ڈاکٹر مغیث الدین پنجاب یونیورسٹی ادارہ علوم ابلاغیات کے بانی تھے،وہ پنجاب یونیورسٹی میں بطور ڈین بھی خدمات سرانجام دیتے رہے۔،ڈاکٹر مغیث الدین سپیرئر یونیورسٹی میں ڈین علوم ابلاغیات بھی خدمات سرانجام دیتے رہے۔وہ یکم جنوری 1951کو لاہور میں پیدا ہوئے،وہ 2003سے 2009تک ادارہ علوم ابلاغیات کے ڈائریکٹر، 2005سے 2011تک پنجاب یونیورسٹی کے ڈین فیکلٹی آف بیہوریل اینڈ سوشل سائنسز، 2002سے 2005تک چیئرمین ہال کونسل پنجاب یونیورسٹی،2006سے 2007تک سٹوڈنٹ ایڈوائزری کمیٹی کے چیئرمین رہے۔ وہ ممتاز اماہر ابلاغیات کے طور پر عالمگیر شہرت کے حامل تھے اور ان کے شاگردوں کی بڑی تعداد میڈیا،تعلقات عامہ، ایڈورٹائزنگ سے منسلک ہے۔ڈاکٹر مغیث الدین شیخ کی نماز جنازہ کے بعد شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے پنجاب یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر نیاز احمد اختر نے مرحوم کی خدمات کو زبردست الفاظ میں خراج عقیدت پیش کیا اور کہا کہ آج ہم اپنے مخلص ساتھی، بہترین استاد اعلیٰ ظرف انسان اور ایک شفیق دوست سے مرحوم ہو گئے ہیں۔ وہ ہمارا قیمتی اثاثہ تھے پنجاب یونیورسٹی کے مختلف عہدوں پر ان کی گراں قدر خدمات کو فراموش نہیں کیا جا سکتا۔ پنجاب یونیورسٹی کے اکیڈیمز کونسل کے اجلاس میں مرحوم کے درجات میں بلندی کی دعا کی گئی اور ان کی خدمات کو سراہا گیاجبکہ پنجاب یونیورسٹی کی جانب سے جلد ہی ڈاکٹر مغیث الدین کی یاد میں تعزیتی ریفرنس بھی منعقد کیا جائے گا۔ان دنوں مرحوم یو ایم ٹی سے بطور ڈین آف میڈیا سٹیڈیز سے منسلک تھے۔مرحوم کی درس و تدریس پنجاب یونیورسٹی کے ڈینز، صدور شعبہ جات کی جانب سے پروفیسر مغیث کی خدمات کو خراج تحسین پیش کیا۔1998میں ترقی پا کر ڈاکٹر مغیث پنجاب یونیورسٹی میں پروفیسر تعینات ہو گئے وہ 40 سال سے زائد صحافت کے استاد رہے وہ ناروے کی اوسلو یونیورسٹی کالج میں بھی پڑھاتے رہے۔ انہیں جرنلزم فورتھ اسٹیٹ ایوارڈ آف آئیوا سٹیٹ امریکہ سے نوازا گیا۔2006میں زلزلہ زدگان کے لئے ایف ایم ریڈیو کے قیام پر اقوام متحدہ نے بھی ایوارڈ سے نوازا۔ہائیر ایجوکیشن کمیشن نے 2003میں ڈاکٹر مغیث کو بیسٹ یونیورسٹی ٹیچر ایوارڈ سے نوازا۔انٹرنیشنل پبلک ریلیشنز ایسوسی ایشن نے 2004میں ڈاکٹر مغیث کو کراون ایوارڈ سے نوازا۔ڈاکٹر مغیث کو ڈبلیو ایچ او اور یونیسف کی جانب سے پولیو ایمبیسڈر نامزد کیا گیا۔گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور، وزیر اعلیٰ پنجاب محمد عثمان بزدار،وزیر اطلاعات فیاض الحسن چوہان، وزیر تعلیم سمیت اہم شخصیات نے ڈاکٹر مغیث الدین شیخ کی وفات پر گہرے رنج و غم کا اظہار کیا ہے۔مرحوم کے فرزند علی مغیث کے ساتھ اظہار تعزیت کرتے ہوئے مرحوم کی خدمات کو سراہا ہے۔ان کی پنجاب یونیورسٹی کے قبرستان میں تدفین ہوئی۔ نماز جنازہ میں پاکستان کی معروف تعلیمی شخصیات بشمول پروفیسر ڈاکٹر شفیق جالندھری،سلمان غنی،نجم ولی خان، فرید پراچہ،عطاء الرحمان، سلمان عابد،پنجاب یونیورسٹی آسا کے صدرپروفیسر ڈاکٹر ممتاز انور چوہدری، عدنان رشید، راؤف طاہر نے بھی شرکت کی۔ ڈاکٹر مغیث کے انتقال پر وائس چانسلر ڈاکٹر نیاز احمد،پرو وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر سلیم مظہر، ڈین فیکلٹی آف بیہوریل اینڈ سوشل سائنسز پروفیسر ڈاکٹر عنبرین جاوید، ڈائریکٹر آئی سی ایس پروفیسر ڈاکٹر نوشینہ سلیم اور فیکلٹی ممبران نے گہرے رنج و غم کا اظہار کیا۔پنجاب یونیورسٹی اکیڈیمک کونسل کے اجلاس میں ڈاکٹر مغیث الدین شیخ کے لئے فاتحہ خوانی بھی کی گئی۔لاہور کالج براے خواتین یونیورسٹی کے شعبہ ابلاغ عامہ کی جانب سے پروفیسر مغیث کی خدمات کو خراج تحسین بھی پیش کیا گیا۔لاہورپریس کلب کے صدر ارشد انصاری، سینئرنائب صدر رائے حسنین طاہر، نائب صدر قذافی بٹ، سیکرٹری بابرڈوگر،جوائنٹ سیکرٹری حافظ فیض احمد، خزانچی زاہد شیروانی اور اراکین گورننگ باڈی دیبا مرزا نے ڈاکٹر مغیث الدین شیخ کی وفات پر گہرے دکھ و غم کا اظہار کیا ہے۔ انہوں نے ڈاکٹر مغیث الدین شیخ کی وفات کو شعبہ صحافت کیلئے بڑا سانحہ قرار دیا اور کہا کہ مرحوم اپنے شاگردوں کیلئے یونیورسٹی کا درجہ رکھتے تھے۔لاہور پریس کلب کی گورننگ باڈی نے مرحوم کی مغفرت و بلند درجات اور لواحقین کیلئے صبر جمیل کی دعا بھی کی۔الیکٹرانک میڈیا رپورٹرز ایسوسی ایشن(ایمرا) کے صدرمحمدآصف بٹ اور ایمرا سیکرٹری سلیم شیخ وایمراباڈی کامعروف ماہر تعلیم اورشعبہ صحافت کیاستادپروفیسر مغیث الدین شیخ کے انتقال پر دکھ اورافسوس کا اظہارکیا گیا ایمرا صدر آصف بٹ کا سوگوار خاندان سے دلی ہمدردی و اظہار تعزیت پروفیسر مغیث الدین شیخ مرحوم کے انتقال سے دلی صدمہ ہوا ہے۔

پروفیسر مغیث

مزید :

صفحہ اول -