یو این او ڈی سی کا دہشتگردی سے متعلق ضابطہ فوجداری نظام میں پاکستان کی پیشرفت کا اعتراف

      یو این او ڈی سی کا دہشتگردی سے متعلق ضابطہ فوجداری نظام میں پاکستان کی ...

  

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) منشیات اور جرائم کی روک تھام کے بارے میں اقوام متحدہ کے دفتر نے دہشتگردی سے متعلق ضابطہ فوجداری کے نظام میں پاکستان کی پیش رفت کا اعتراف کیا ہے۔یہ بات انسداد دہشت گردی شاخ کے سربراہ مسعود کریم پور نے جج صاحبان کے بارے میں جنوبی ایشیا کی علاقائی ٹول کٹ‘’دہشتگردی کے مقدمات کے موثر عدالتی فیصلوں کی قومی بنچ بک کی تیاری میں تعاون”کے بارے میں بدھ کے روز اسلام آباد میں منعقد ہونیوالے ایک ویڈیو اجلاس کے دوران بتائی۔اجلاس کا اہتمام منشیات اور جرائم کے بارے میں اقوام متحدہ کے دفتر نے انسداد دہشت گردی کے قومی ادارے اور سندھ جوڈیشل اکیڈمی کے تعاون سے کیا تھا۔مشاورتی اجلاس میں سندھ کے انسداد دہشت گردی کی عدالتوں کے بیس سے زائد ججوں، امریکہ کی دو ڈسٹرکٹ عدالتوں کے ججوں اور آسٹریلیا کے ایک مجسٹریٹ نے شرکت کی۔اس موقع پر مسعود کریم پور نے کہا کہ منشیات اور جرائم کی روک تھام میں تعاون کے بارے میں پاکستان اور اقوام متحدہ کا دفتر نے تربیت کی فراہمی کے ذریعے خاطر خواہ نتائج حاصل کئے ہیں۔یورپی یونین کی ناظم الامور اینی مارشل نے قانون کی حکمرانی اور انسانی حقو ق کی بالادستی کیلئے ضابطہ فوجداری خاص طورپر دہشت گردی کے مقدمات میں عدلیہ کے اہم کردار پر زور دیا۔علاقائی ٹول کٹ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی انسداد دہشت گردی کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر نے پاکستان سمیت علاقائی تعان کیلئے جنوبی ایشیا کے ممالک کی تنظیم سارک کے تمام رکن ممالک کے ججوں کے موثر تعاون سے تیار کی ہے۔اس میں انسداد دہشت گردی کے بارے میں سلامتی کونسل کی متعلقہ قراردادوں اوربین الاقوامی طریقہ کار کی وضاحت کی گئی ہے۔

اعتراف

مزید :

صفحہ اول -