سمارٹ لاک ڈاؤن کے دوران شہریوں کے لئے ضروری ہدایات جاری

سمارٹ لاک ڈاؤن کے دوران شہریوں کے لئے ضروری ہدایات جاری

  

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر) ملک میں سمارٹ لاک ڈان کے دوران شہریوں کے لئے جاری ضروری ہدایات میں کہاگیاہے کہ کرونا وائرس کی وبا حساس مرحلے میں داخل ہو چکی ہے اور بیماری کا پھیلاؤ بتدریج شدت اختیار کر سکتا ہے۔ یہ تسلسل مزید جاری رہ سکتا ہے اور تسلسل کا کل دارومدار ہماری آئندہ کی سماجی اور انتظامی ترجیحات پر ہو گا، بطور ذمہ دار شہری ہمیں سمارٹ لاک ڈان کے مقصد کو سمجھنے اور اس پر کلی طور پر عمل کرنے کی اشد ضرورت ہے، انتظامیہ کی طرف سے لاک ڈاؤن سے پہلے24-48گھنٹے کا نوٹس دیا جائے گا۔ اس دوران آپ اپنی ضروری تیاریاں مکمل کر لیں اور اشیا ضرورت مناسب مقدار میں سٹور کر لیں۔ سرکاری اور نجی ملازمین اپنے دفاتر کو اطلاع کردیں جو کہ قانونی طور پر آپ کو چھٹی دینے کے پابند کر دیے گئے ہیں،سمارٹ لاک ڈاؤن کی اطلاع موصول ہونے پر دوسرے علاقوں میں منتقل ہونے سے گریز کریں،اپنے گھروں کے اندر محدود رہیں اور ماسوائے ایمرجنسی کے باہر نکلنے سے ہز گز گریز کریں،اگر بوجہ مجبوری /ایمرجنسی باہر نکلنے کی ضرورت در پیش ہو، تو گھر کا ایک نوجوان اور صحت مند فرد احتیاطی تدابیر کے ساتھ ماسک پہن کر باہر نکلے اور سماجی فاصلہ برقرار رکھے۔ کسی بھی صورت میں لاک ڈان علاقے سے باہر نہ نکلیں۔ بدھ کو حکومت کی جانب سے شہریوں کے لئے جاری رہنمااصولوں میں کہاگیا ہے کہ پاکستان میں اس وقت کرونا وائرس کی وبا حساس مرحلے میں داخل ہو چکی ہے اور بیماری کا پھیلا بتدریج شدت اختیار کر سکتا ہے۔ یہ تسلسل مزید جاری رہ سکتا ہے اور تسلسل کا کل دارومدار ہماری آئندہ کی سماجی اور انتظامی ترجیحات پر ہو گا۔ دوست ملک چین نے حکومت اور عوام کے باہمی تعاون سے اس مرض کو شکست دی اور جامع عوامی اشتراک سے غیر طبی ذرائع برے کار لاتے ہوئے کرونا کے پھیلا کو کامیابی سے محدود کیا۔ اس بیماری کے پھیلا کے تسلسل کو روکنے کے ساتھ ساتھ معاشی سرگرمیوں کو مناسب انداز سے رواں رکھنے کے لئے حکومت نے سمارٹ لا ک ڈان کی متوازن حکمت عملی کو اپنایا ہے۔ بطور ذمہ دار شہری ہمیں سمارٹ لاک ڈان کے مقصد کو سمجھنے اور اس پر کلی طور پر عمل کرنے کی اشد ضرورت ہے تاکہ ہم بیماری کے پھیلا کو روک سکیں۔ یہ ہمارا معاشرتی، قومی اور سب سے بڑھ کر شرعی فریضہ ہے۔ سمارٹ لاک ڈان کا مقصدسمارٹ لاک ڈان کے ذریعے معلوم ہا ٹ سپاٹس میں موجود آبادی کو محدود کر کے COVID-19کے مزید پھیلا کو نہ صرف روکا جاتا ہے بلکہ اسے کم کیا جاتا ہے تاکہ بیماری کے تسلسل کو توڑا جا سکے۔سمارٹ لاک ڈاؤن کے دوران شہریوں کے لئے ہدایات میں کہاگیا کہ انتظامیہ کی طرف سے لاک ڈاؤن سے پہلے24-48گھنٹے کا نوٹس دیا جائے گا۔ اس دوران آپ اپنی ضروری تیاریاں مکمل کر لیں اور اشیا ضرورت مناسب مقدار میں سٹور کر لیں۔ سرکاری اور نجی ملازمین اپنے دفاتر کو اطلاع کردیں جو کہ قانونی طور پر آپ کو چھٹی دینے کے پابند کر دیے گئے ہیں۔سمارٹ لاک ڈان کی اطلاع موصول ہونے پر دوسرے علاقوں میں منتقل ہونے سے گریز کریں۔ اپنے گھروں کے اندر محدود رہیں اور ماسوائے ایمرجنسی کے باہر نکلنے سے ہز گز گریز کریں۔ اگر بوجہ مجبوری /ایمرجنسی باہر نکلنے کی ضرورت در پیش ہو، تو گھر کا ایک نوجوان اور صحت مند فرد احتیاطی تدابیر کے ساتھ ماسک پہن کر باہر نکلے اور سماجی فاصلہ برقرار رکھے۔ کسی بھی صورت میں لاک ڈان علاقے سے باہر نہ نکلیں۔ جو افراد بوجہ مجبوری باہر نکلیں وہ متعین ہاٹ سپاٹ حدود سے قطعا باہر مت نکلیں۔ گھر کے معمر افراد، حاملہ خواتین، ہائی بلڈ پریشر اور ذیابطیس کے مریضوں کا خصوصی خیال رکھیں،ان کو گھر سے باہر مت نکلنے دیں۔ جہاں تک ہو سکے ا ن کو گھر کے اند ر محدود کریں اور احتیاطی تدابیر اختیار کریں۔ دکاندار حضرات اپنی دکانوں پر گاہکوں کے سماجی فاصلے اور ماسک پہننے کو یقینی بنائیں بصورت دیگر انکے خلاف قانونی چارہ جوئی بھی کی جاسکتی ہے۔ سمارٹ لاک ڈاؤن والے علاقوں میں مساجد کے اندر صرف مساجد کا عملہ با جماعت نماز پڑھے۔ باقی افراد اپنے گھروں پر نماز کی ادائیگی کریں۔ امام مسجد/موذن دن کے دوران متعدد دفعہ لاڈ سپیکر کے ذریعے احتیاطی تدابیر اختیار کرنے کی تلقین کریں۔ اپنے علاقے میں رضاکاروں، کمیونٹی ممبران، مساجد کے امام اور مقامی رہنماں کے ذریعے ضروری سروس کی فراہمی،لوگوں کی نگہداشت اور تدابیر پر عمل کے لئے مقامی انتظامیہ سے تعاون کے عمل کو یقینی بنائیں۔ COVID-19کی علامات ظاہر ہونے کی صورت میں اپنے مقامی رضا کار ہیلپ لائن1166پر رابطہ کریں۔ سمارٹ لاک ڈان والے علاقے میں مامور قانون نافذ کرنے والے اداروں کے اہلکاروں سے تعاون کریں اور تلخ کلامی/جھگڑے سے گریز کریں۔ یہ آپ کی قانونی اور اخلاقی ذمہ داری ہے۔ سمارٹ لاک ڈان کے دوران آپ کے علاقے کے ہسپتال میں اوپی ڈیز بند رہیں گی، لہذا معمول کے چیک اپ کے لیے ہسپتال مت جائیں۔ تاہم ایمرجنسی کی صورت میں ہسپتال جانے کی سہولت میسر رہے گی۔کووڈ 19کی علامات ظاہر ہونے کی صورت میں گھر یلو ٹوٹکوں اور خود تشخیصی سے گریز کریں اور متعلقہ طبی ادارے /عملے سے رابطہ کرکے ان کی ہدایات پر عمل کریں۔ ہسپتال میں داخلے کی صورت میں غیر ضروری طور پر گھرکے افراد کو ساتھ مت لے جائیں اور ہسپتال کی ہدایات پر عمل کریں۔ کرونا وائرس وبا کے متعلق سوشل میڈیا پر موجود منفی پرو پیگنڈہ پر کان مت دھریں اور صرف مصدقہ حکومتی معلومات پر بھروسہ کریں۔ رہنما اصولوں میں کہاگیا کہ بطور ذمہ دار شہری، اپنی حفاظت اوراپنے پیاروں کے بچا کے لیے حکومتی ہدایات پر عملدرآمد ہمارا قومی فریضہ ہے۔ آپ کے تعاون سے کرونا وبا کو یقینی طور پر شکست دی جا سکتی ہے۔ یاد رکھیں، چند دن کے سمارٹ لاک ڈان کی مشکلات متعدد قیمتی جانیں بچانے کا ذریعہ بن سکتی ہیں جن میں آپ کے قریبی افراد بھی شامل ہو سکتے ہیں۔

سمارٹ لاک ڈاؤن

مزید :

صفحہ اول -