ضرورت پڑی تو اداروں میں فیورٹ ازم کیخلاف حکم جاری کرینگے: چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ

  ضرورت پڑی تو اداروں میں فیورٹ ازم کیخلاف حکم جاری کرینگے: چیف جسٹس لاہور ...

  

لاہور (نامہ نگار خصوصی)چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ مسٹر جسٹس محمد قاسم خان نے کورونا لاک ڈاؤن کے دوران وفاقی حکومت کی جانب سے وکلا کے لئے فنڈز مختص نہ کرنے کے کیس کی سماعت کے دوران ریمارکس دیئے کہ وفاقی حکومت نے بیڈ گورننس کی انتہا کر دی ہے،عجیب تماشہ لگایا ہوا ہے،ضرورت پڑی تو اداروں میں فیورٹ ازم کے خلاف حکم جاری کریں گے،فاضل جج نے حکومت کے خلاف آبزرویشن کو عبوری عدالتی حکم کا حصہ بنا تے ہوئے آئندہ سماعت پر عمل درآمد رپورٹ طلب کرلی ہے،وکلاء کے لئے فنڈز مختص کرنے کے لئے دائر لاہورہائی کورٹ بار کی درخواست کی سماعت شروع ہوئی تووفاقی حکومت کے وکیل نے عدالت کوبتایا کہ وکلا ء کے لئے فنڈز مختص کرنے کے لئے سمری ارسال ہوچکی ہے جس پرفاضل جج نے واضح کیا کہ عدالت نے وفاقی حکومت کو فنڈز مختص کرنے کا نہیں کہا،ہم نے یہ کہا تھا کہ وفاقی حکومت نے وکلا ء کے لئے فنڈز مختص کرنے ہیں یا نہیں اس کا جواب دیں، چیف جسٹس نے مذکورہ بالا ریمارکس کے ساتھ کیس کی مزید سماعت آئندہ تاریخ پیشی تک ملتوی کردی۔

بیڈ گورننس

مزید :

صفحہ آخر -