ریلوے اور مسافرں کی حفاظت کیلئے سخت ہدایات جاری

  ریلوے اور مسافرں کی حفاظت کیلئے سخت ہدایات جاری

  

ملتان(نمائندہ خصوصی)وزارت ریلوے نے تمام ڈویڑنل سپرنٹنڈنٹس کو ریلوے کی سیفٹی اور مسافروں کی حفاظت کے حوالے سے سخت ہدایات جاری کی ہیں۔ماہانہ رپوٹ سینئر جنرل منیجر / چیف ایگزیکٹو آفیسر پاکستان ریلویز کے ذریعے وزارت ریلوے میں جمع کروانے (بقیہ نمبر10صفحہ6پر)

کی ہدایت۔ تفصیلات کے مطابق لیول کراسنگ اور دیگر ٹرین حادثات کی فوری روک تھام کے لیے سیکرٹری / چیئرمین ریلویز حبیب الرحمان گیلانی کی زیر صدارت اہم اجلاس منعقد ہواجس میں ضروری ہدایات جاری کی گئیں۔ سیکرٹری / چیئرمین ریلویزنے کہا کہ مسافروں کی حفاظت اور ٹرین آپریشن کی سیفٹی پر کسی قسم کا سمجھوتہ نہیں کیاجائے گا۔مسافروں کی حفاظت اور ٹرینوں کی سیفٹی پاکستان ریلوے کے تمام ملازمین کی ذمہ داری ہے۔ چیف آپریٹنگ سپرنٹنڈنٹس سیفٹی اس رپورٹ کو چیف ایگزیکٹو آفیسر پاکستان ریلویز کی منظوری کے بعد وزارت ریلوے کو بھیجیں گے۔ یہ بھی ہدایت کی گئی کہ ڈویڑن اور سیکشن وائز غیر قانونی کراسنگ کی لسٹ مہیا کی جائے۔ تمام ڈویڑنل سپرنٹنڈنٹس جیو میپنگ کے ذریعے ان مقامات کو تلاش کریں اور لسٹ مہیا کی جائے جہاں ڈویڑنل سپرنٹنڈنٹس نے ٹریک کے نیچے سے راستہ بنایا ہویا باڑ لگوائی یا کوئی سیمنٹ کی دیوار بنوائی ہو۔ پٹرولر، پرماننٹ وے انسپکٹر اور پولیس کو تعینات کیا جائے تا کہ ٹریک کے اوپر سے گاڑیاں گزارنے کے لیے غیر محفوظ اور معروف مقامات کو چیک کریں۔اگر کسی بھی غیر قانونی مقام پر ایکسیڈنٹ ہوتاہے تو اْس سیکشن کا اے ای این اور ڈی ایس پی ذمہ دار ہوں گے۔ریلوے کے ملازمین کی مجرمانہ غفلت کے خلاف ایف آئی آر درج کرنا اور قانونی چارہ جوئی کرنا ریلوے پولیس کی ذمہ داری ہوگی۔ گاڑیاں گزارنے کے لیے ٹریک کے اوپر غیر قانونی بنائے گئے راستوں کو ختم کیا جائے۔ روڈ کے ساتھ وارننگ بورڈز لگائے جائیں اور لیول کراسنگ کو عبور کرنے والی سٹرکوں کی مرمت کی جائے۔ لیول کراسنگ پر تعینات عملہ کی ٹریننگ کی جائے اور اْن کو مانیٹر کیا جائے اور اْن کے میڈیکل اور جسمانی ٹیسٹ کو یقینی بنایا جائے۔ مرحلہ وار تمام لیول کراسنگ پر خودکار پبلک وارننگ سسٹم (چمکتی روشنی والی بیل) لگائی جائے۔ مصروف مینڈ لیول کراسنگ پر رابطے کے لیے ٹیلی فون وغیرہ کی سہولت کو یقینی بنایا جائے ڈیوٹی روسٹر کے مطابق سٹاف اور ٹول اینڈ پلانٹ کو چیک کیاجائے۔ کسی بھی غیر قانونی کراسنگ اور لیول کراسنگ پر حادثے کی صورت میں متعلقہ ملازمین، سپروائزر اور افسران ذمہ دارہوں گے۔ تمام ڈویڑنل سپرنٹنڈنٹس مینڈ لیول کراسنگ پر لگے ہوئے گیٹس کو چیک کریں گے کہ وہ ریلوے مینول کے مطابق مناسب کام کررہے ہیں۔ اس کے علاوہ ریلوے قوانین کے مطابق تمام مٹی کے تیل سے چلنے والی ہینڈ سگنلز کو ایل ای ڈی لائٹس میں تبدیل کیا جائیگا.

ہدایات

مزید :

ملتان صفحہ آخر -