پولیس حراست میں ملزم کی ہلاکت، مقدمہ کے عدم اندراج پر ورثاء کا شدید احتجاج

  پولیس حراست میں ملزم کی ہلاکت، مقدمہ کے عدم اندراج پر ورثاء کا شدید احتجاج

  

ڈیرہ غازیخان(سٹی رپورٹر) وزیراعلیٰ پنجاب سردارعثمان بزدار کاڈیرہ غازی خان میں پولیس تشدد سے زیر حراست ملزم کے جاں بحق ہونے کے واقعہ کا نوٹس لے لیا۔ آر پی او ڈیرہ غازی خان سے غیر جانبدارانہ تحقیقات کرکے48گھنٹے میں رپورٹ طلب کرلی۔تشدد کے ذمہ دار اہلکاروں کے خلاف قانونی اورمحکمانہ کارروائی عمل میں لائی جائے۔ اور انصاف کے تمام تقاضے پورے کیے جائیں۔جاں بحق ملزم کے لواحقین کو ہرصورت انصاف فراہم کیا جائے۔وزیراعلی پنجاب جبکہ ورثاء کاچوک چورہٹہ پر احتجاج۔ تفصیلات کے مطابق ڈیرہ غازیخان میں گذشتہ روز سی آئی اے سٹاف میں موٹرسائیکل کی چوری کے مقدمہ میں زیر تفتیش زریاب نامی شہری کی پر اسرار ہلاکت کے بعد مقتول کے ورثاء نے مقدمہ درج کرنے کی وعدہ خلافی(بقیہ نمبر11صفحہ6پر)

پرغم و غصہ کا اظہار کرتے ہوئے مقتول کی نعش کو چوک چورہٹہ کے مقام پر رکھ دوسرے روز بھی پولیس کے خلاف احتجاجی مظاہرہ جاری کیااورشدید گرمی میں ملتان تونسہ روڈ سمیت شہری کی تمام داخلی و خارجی شاہراوں پر رکاوٹیں کھڑی کرکے اس کو بند کردیا جس سے دونوں اطراف ٹریفک کی لمبی لائین لگ گئیں۔ اس دوران مظاہرین پولیس کے خلاف شدید نعرے بازی کرتے رہے۔مظاہرے میں ورثاء اور اہل علاقہ سمیت سماجی و سیاسی شخصیات سردار سیف الدین خان کھوسہ نے بھی حصہ لیا۔ اور یکجہتی اور افسوس کا اظہار کیاتاہم وزیر اعلی پنجاب عثمان بزدار کے واقعہ کا نوٹس لینے کے بعد آر پی او ڈی جی خان نے واقعہ میں ملوث اہلکاروں کے خلاف مقدمہ درج کرکے ان کے خلاف فوری کاروائی کرنے کا حکم دے دیا۔اس موقع پی ٹی آئی کیسنئیر سیاسی رہنما سابق ایم این اے سردار سیف الدین کھوسہ کا کہنا تھا کہ مقتول کے ورثا کا جو مطالبہ تھا پولیس اہلکاروں کے خلاف مقدمہ درج کرنے اور ان کو گرفتار کرنے کا وہ پورا ہوچکا ہے لہذا وہ اب اس احتجاج کو ختم کررہے جس پر مظاہرین پر امن طور پر منتشر ہوگئے۔

ہلاکت

مزید :

ملتان صفحہ آخر -