نجی لیبارٹری کی کورونا نیگٹو رپورٹ شیئرکرنا محمد حفیظ کو مہنگا پڑگیا، پی سی بی حکام نالاں

نجی لیبارٹری کی کورونا نیگٹو رپورٹ شیئرکرنا محمد حفیظ کو مہنگا پڑگیا، پی سی ...
نجی لیبارٹری کی کورونا نیگٹو رپورٹ شیئرکرنا محمد حفیظ کو مہنگا پڑگیا، پی سی بی حکام نالاں

  

لاہور(ویب ڈیسک) نجی لیبارٹری کی کورونا نیگٹو رپورٹ شیئرکرنا محمد حفیظ کو مہنگا پڑگیا اور پی سی بی حکام محمد حفیظ کے رویے سے ناراض ہوگئے، چیف ایگزیکٹیو وسیم خان نے کورونا رپورٹ سوشل میڈیا پر شیئر کرنے پر فون کرکے کلاس لے لی۔

ایکسپریس کے ذرائع کے مطابق وسیم خان نے کہاکہ ٹویٹ سے پاکستانی ٹیسٹنگ نظام کی جگ ہنسائی ہوئی، رپورٹ پبلک کرنے سے پہلے آپ کو پی سی بی سے بات کرنی چاہیے تھی، اس قدم سے مایوسی ہوئی ہے، اس معاملے کا تفصیلی جائزہ لیں گے۔جواب میں حفیظ نے موقف اختیار کیا کہ وہ پازٹیو رپورٹ آنے پر بہت تناؤ میں تھے، ایک آفیشل سے رابطہ کیا لیکن کوئی فوری ردعمل سامنے نہیں آیا جس پر ایسا کیا۔

ذرائع کے مطابق نیگیٹو رپورٹ آنے کے باوجود سابق کپتان نے پی سی بی کی ہدایات کے تحت خود کو الگ ایک کمرے تک محدود کررکھا ہے۔

یاد رہے کہ ا س سے قبل پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کی جانب سے کروائے گئے کورونا ٹیسٹ کی رپورٹ مثبت آنے پر محمد حفیظ نے نجی لیبارٹری سے دوبارہ ٹیسٹ کروایا جو منفی آیا ہے جس سے مثبت رپورٹ ہونے والے دیگر کرکٹرز کے ٹیسٹوں پر بھی سوالیہ نشان لگ گیا ہے۔

حفیظ نے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری پیغام میں لکھا ”پی سی بی کی جانب سے کرائے جانے والے کورونا ٹیسٹ کا نتیجہ مثبت آنے کے بعد اپنی تسلی اور احتیاط کو ملحوظ خاطر رکھتے ہوئے نجی لیبارٹری سے اپنا اور اپنے اہل خانہ کا ٹیسٹ کروایا اور سب کی رپورٹس ہی منفی آئی ہیں، اللہ کا شکر ہے اور وہ ہم سب کو اپنی حفاظت میں رکھے۔“

محمد حفیظ کی جانب سے نجی لیبارٹری سے ٹیسٹ منفی آنے کے بعد دیگر 10 کرکٹرز کی کورونا رپورٹس پر بھی سوالیہ نشان لگ گیا ہے جنہیں دورہ انگلینڈ کیلئے قومی سکواڈ میں منتخب کیا گیا اور پی سی بی کی جانب سے ان کے کورونا ٹیسٹ کرانے پر نتائج مثبت آئے اور اب تمام کھلاڑی از خود قرنطینہ اختیار کئے ہوئے ہیں۔

مزید :

کھیل -