کیاوکیل تحقیقاتی رپورٹ بغل میں لےکربیٹھے ہیں؟،سندھ ہائیکورٹ طیارہ حادثہ کی تحقیقاتی رپورٹ جمع نہ کرانے پر برہم

کیاوکیل تحقیقاتی رپورٹ بغل میں لےکربیٹھے ہیں؟،سندھ ہائیکورٹ طیارہ حادثہ کی ...
کیاوکیل تحقیقاتی رپورٹ بغل میں لےکربیٹھے ہیں؟،سندھ ہائیکورٹ طیارہ حادثہ کی تحقیقاتی رپورٹ جمع نہ کرانے پر برہم

  

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن)پی آئی اے طیارہ حادثے کی تحقیقات سے متعلق کیس میں رپورٹس جمع نہ کرانے پر سندھ ہائیکورٹ برہم ہو گئی اور سول ایوی ایشن حکام کو نوٹس جاری کردیئے ،جسٹس عمر سیال نے ریمارکس دیتے ہوئے کہاکہ کیاوکیل تحقیقاتی رپورٹ بغل میں لےکربیٹھے ہیں؟۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق سندھ ہائیکورٹ میں پی آئی اے طیارہ حادثہ کی تحقیقات سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی،تحقیقاتی رپورٹ پیش نہ کرنے پرسندھ ہائیکورٹ سول ایوی ایشن پربرہم ہو گئی،عدالتی معاون نے کہاکہ ٹیسٹنگ کے بعد سی اے اے پائلٹس کو لائسنس جاری کرتی ہے،اے ٹی آر طیارہ حادثے کی رپورٹ آج تک عدالت میں جمع نہیں کرائی گئی۔

جسٹس عمر سیال نے کہاکہ سی اے اے کی جانب سے نہ کوئی پیش ہوا اور نہ تحریری جواب جمع کرایا گیا،جونیئر وکیل نے کہاکہ پی آئی اے کے وکیل جواد سروانہ کورونا وائرس کا شکار ہوگئے ہیں،جسٹس عمر سیال نے کہاکہ کیاوکیل تحقیقاتی رپورٹ بغل میں لےکربیٹھے ہیں؟،عدالت نے استفسار کیاکہ طیارہ حادثہ کی تحقیقاتی رپورٹ کیوں جمع نہیں کرائی گئی؟۔

عدالت نے سول ایوی ایشن کوازسرنو نوٹس جاری کردیئے،عدالت نے سول ایوی ایشن حکام کوآئندہ سماعت پرجواب جمع کرانےکاحکم دیتے ہوئے کیس کی سماعت جولائی کے تیسرے ہفتے تک ملتوی کردی۔

مزید :

قومی -علاقائی -سندھ -کراچی -