فواد چودھری سے استعفیٰ لینے کا مطالبہ مسترد، اسد عمرا ور شاہ محمود قریشی کی عمران خان سے ملاقات کی اندرونی کہانی منظرعام پر، نجی ٹی وی چینل نے بڑا دعویٰ کردیا

فواد چودھری سے استعفیٰ لینے کا مطالبہ مسترد، اسد عمرا ور شاہ محمود قریشی کی ...
فواد چودھری سے استعفیٰ لینے کا مطالبہ مسترد، اسد عمرا ور شاہ محمود قریشی کی عمران خان سے ملاقات کی اندرونی کہانی منظرعام پر، نجی ٹی وی چینل نے بڑا دعویٰ کردیا

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) نجی ٹی وی چینل نے دعویٰ کیا ہے کہ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی اور اسد عمر نے وزیراعظم عمران خان سے گزشتہ روز ملاقات کی اور ان سے مطالبہ کیا کہ متنازعہ انٹرویو پر وزیرسائنس و ٹیکنالوجی فوادچودھری سے استعفیٰ لیا جائے لیکن وزیراعظم نے یہ مطالبہ مسترد کردیا اور کہا کہ آپ اپنے فرائض سرانجام دیتے رہیں، یہ کام میرا ہے کہ ٹیم میں رکھیں اور کسے نہیں۔ 

92 نیوز نے ذرائع کے حوالے سے دعویٰ کیا ہے کہ ملاقات کی اندرونی کہانی سامنے آگئی ہے اور دونوں وزراء نے موقف اپنایا کہ  انٹرویو سے لگتا ہے کہ ناکامیوں کے ذمہ دار ہم ہیں، ایسا تاثر دینے کی کوشش کی جارہی ہے   کہ حکومت او ر پارٹی ہماری وجہ سے ناکام ہوئی ، جہانگیر ترین کے خلاف کوئی سازش نہیں کی ، نہ اس کا حصہ ہیں۔وزراء نے مزید کہا کہ  فواد چودھری نے غیرذمہ دارانہ رویئے کا مظاہرہ کیا او ر کارروائی کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ اگر کارروائی نہ کی گئی تو نرمی کا  تاثر جائے گا، تاہم دونوں کا  استعفے کا مطالبہ مسترد کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ آپ اپنے کام اسرانجام دیتے رہیں، یہ کام میرا ہے کہ کسے ٹیم میں رکھیں اور کسے نہیں۔ 

یادرہے کہ اس سے قبل پنجاب کے وزیراطلاعات فیاض الحسن چوہان بھی کہہ چکے ہیں کہ اگر فوادچودھری پارٹی سے خوش نہیں تو استعفیٰ دیدیں۔ تاہم بعد میں فواد چودھری نے بھی سوشل میڈیا کا محاذ سنبھالا اور ٹوئٹر پر لکھا کہ " اس وقت تک وزیر رہوں گا جب تک وزیر اعظم کا اعتماد حاصل ہے، کسی اور کی خواہش پر استعفی دینے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا، سیاست کمزور دل حضرات کا کھیل نہیں "۔

سوشل میڈیا پر موقف دینےسے قبل گزشتہ روز ہی فواد حسین چودھری اور اسد عمر کی بھی آپس میں ملاقات ہوچکی ہے جس کے بعد کہا گیا کہ غلط فہمیاں دور کرلی گئیں، اس سے قبل غیر ملکی خبررساں ادارے کو دیئے گئے انٹرویو میں فواد چودھری نے انکشاف کیا تھاکہ جہانگیر ترین نے اسد عمر کو نکلوایا اور پھر اسد عمر واپس آئے تو انہوں نے جہانگیر ترین سے بدلہ لیا۔

نجی نیوز چینل دنیا نیوز کے مطابق اس ملاقات میں دونوں رہنماﺅں نے آپس میں تمام گلے شکوے دور کر لیے ہیں۔ فواد چودھری نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کی قیادت میں ہم سب متحد ہیں۔ جمہوری پارٹی کے اندر ہر کسی کو رائے دینے کی اجازت ہوتی ہے۔ان کا کہنا تھا کہ غلط فہمیاں ہو جاتی ہیں جنہیں دور کر لیا گیا ہے، ہم سب نے مل کر پارٹی کے لیے کام کرنا ہے۔دوسری جانب وفاقی وزیر اسد عمر نے کہا ہے کہ میں نے کبھی جہانگیر ترین کے بارے میں کچھ نہیں کہا، میں نہیں مانتا کہ مجھے جہانگیر ترین نے نکلوایا، جو فیصلے ہوئے وہ وزیراعظم نے کئے۔

ادھر فواد چودھری اور اسد عمر کی ملاقات کی تصویر شیئر کرتے ہوئے اینکر پرسن طلعت حسین نے طنزیہ انداز میں کہا کہ دونوں کو ماسک پہنا دیے گئے اور بتا دیا گیا کہ اگر لڑتے رہے تو دونوں کے سی وی واپس کر دیے جائیں گے ۔

مزید :

قومی -