" فیئر اینڈ لولی" کا خاتمہ، رنگ گورا کرنے والی کریم بنانے والی کمپنی کا بڑا فیصلہ

" فیئر اینڈ لولی" کا خاتمہ، رنگ گورا کرنے والی کریم بنانے والی کمپنی کا بڑا ...

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)فیئر اینڈ لولی بنانے والی کمپنی یونی لیور نے رنگ گورا کرنیوالی اپنی اس کریم کے نام سے لفظ " فیئر " ختم کرنے کا فیصلہ کرلیا ، کمپنی کے ایک ذریعے نے رائٹرز کو بتایا کہ اس کا متبادل نام " ڈیئر اینڈ لولی ، کیئر اینڈ لولی یا پھر فریش اینڈ لولی ہوسکتا ہے ، ان ناموں پر غور جاری ہے لیکن پہلے نام کیساتھ اب مزید یہ پراڈکٹ نہیں چلے گی ، یاد رہے کہ امریکہ میں سیاہ فام شہری کے قتل کے بعد دنیا بھر میں مہم چل رہی ہے اور فیئر اینڈ لولی کو بھی سیاہ جلد والے لوگوں کیخلاف منفی خیالات پر تنقید کا نشانہ بنایا جاتارہاہے ، حتیٰ کہ اس کی برانڈنگ سے وابستہ شوبز شخصیات کو بھی بلیک لائیوز میٹرز کے ٹوئیٹ پر صارفین نے آڑھے ہاتھوں لیا۔ 

رائٹرز کے مطابق بلیک لائیوز میٹر مہم (Black Lives Matter movement) کی وجہ سے کئی کمپنیوں کو تنقید کا سامنا کرنا پڑا ،جنوب ایشیائی منڈی یہاں کے لوگوں کی جلد کی رنگت کی وجہ سے کاسمیٹکس کمپنیوں کے لیے بہترین ہے ، لیکن اب بہت جلد تبدیلی آرہی ہے اور سوالات اٹھناشروع ہوگئے ہیں جس کی وجہ سے جوہن سن اینڈ جوہن سن نے اسی ماہ کہا تھا کہ وہ اپنی سکین وائیٹنگ کریموں کی فروخت بند کررہے ہیں، ایک بیان میں یونی لور کے بیوٹی اینڈ پرسنل کیئر ڈویژن کے صدر سنی جین نے کہا کہ "ہمیں احساس ہوا ہے کہ لفظ فیئر، وائیٹ اور لائیٹ کا استعمال خوبصورتی کے اکلوتے  آئیڈیل کا تاثر دیتے ہیں، اور ہم ایسا نہیں سوچتے کہ یہ درست ہے ، اور اب ہم اسے دیکھنا چاہتے ہیں۔ 

یونی لور ہندوستان کے 67 فیصد شیئرز یونی لور کے پاس ہیں اور یہ کمپنیاں  ڈو اور کنور بھی بیچ رہی ہیں۔ ذرائع نے وضاحت کی ہے کہ مصنوعات تب واپس منگوائی جاتی ہیں جب اس میں کوئی مسئلہ ہو، یہ بات ذہن میں رکھیں کہ اب اس کی کوالٹی کا نہیں بلکہ نام کا مسئلہ ہے ۔ 

مزید :

ڈیلی بائیٹس -