بدترین معاشی بدحالی کے لیے تیار ہوجائیں، آئی ایم ایف نے اب تک کی سب سے خطرناک وارننگ جاری کردی

بدترین معاشی بدحالی کے لیے تیار ہوجائیں، آئی ایم ایف نے اب تک کی سب سے خطرناک ...
بدترین معاشی بدحالی کے لیے تیار ہوجائیں، آئی ایم ایف نے اب تک کی سب سے خطرناک وارننگ جاری کردی

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) کورونا وائرس کی وباءسے مختلف ممالک اور دنیا کی معیشت کو کتنا نقصان ہو گا؟ آئی ایم ایف نے نئی پیش گوئی میں سابق اندازوں سے بھی زیادہ خوفناک انکشاف کر دیا ہے۔ میل آن لائن کے مطابق آئی ایم ایف نے بدھ کے روز نظرثانی شدہ معاشی تخمینہ رپورٹ جاری کی ہے جس کے مطابق رواں سال کورونا وائرس کی وجہ سے عالمی جی ڈی پی میں 4.9فیصد تک کی ریکارڈ کمی ہو گی، پہلے اندازے میں یہ شرح 3فیصد بتائی گئی تھی۔دو سال کے عرصے میں عالمی معیشت کو 12ٹریلین ڈالر کا نقصان ہو گا۔ امریکی معیشت کے متعلق آئی ایم ایف نے پیش گوئی کی ہے کہ اس کا جی ڈی پی 8فیصد گر جائے گا۔

کورونا وائرس چین سے پھیلا تھا لیکن اس کے پھیلاﺅ کو روکنے کے لیے اٹھائے گئے چینی حکومت کے انتہائی مو¿ثر اقدامات ہی کا نتیجہ ہے کہ آئی ایم ایف کی اس نئی تخمینہ رپورٹ کے مطابق چین دنیا کا واحد ملک ہے جس کی معیشت رواں سال بھی ترقی کرے گی۔ آئی ایم ایف کی پیش گوئی کے مطابق چین کے جی ڈی پی میں رواں سال کمی کی بجائے 1فیصد اضافہ ہو گا۔ آئی ایم ایف کا کہنا ہے کہ رواں سال کی دوسری سہ ماہی میں 30کروڑ سے زائد نوکریاں ختم ہو جائیں گی۔ عالمی ادارے رپورٹ کے مطابق کورونا وائرس کی وجہ سے دنیا اور انفرادی طور پر ممالک کو جس قدر معاشی نقصان پہنچ رہا ہے، 1930ءکی دہائی میں آنے والے گریٹ ڈپریشن کے بعد اس کی مثال نہیں ملتی۔

مزید :

بین الاقوامی -