’کبھی فحش فلم نہ بنانا‘ فحش فلموں کی سابقہ اداکارہ میا خلیفہ نوجوان لڑکیوں کی منتیں کرنے لگیں، اپنا دردناک راز بتادیا

’کبھی فحش فلم نہ بنانا‘ فحش فلموں کی سابقہ اداکارہ میا خلیفہ نوجوان لڑکیوں ...
’کبھی فحش فلم نہ بنانا‘ فحش فلموں کی سابقہ اداکارہ میا خلیفہ نوجوان لڑکیوں کی منتیں کرنے لگیں، اپنا دردناک راز بتادیا

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) فحش فلموں کی سابق لبنانی نژاد امریکی اداکارہ میا خلیفہ نے 21سال کی عمر میں فحش ویب سائٹ ’پورن حب‘ کے ساتھ اس شرمناک انڈسٹری میں قدم رکھا لیکن تین ماہ بعد ہی اس کام سے تائب ہو گئی۔ ان تین مہینوں میں اس نے صرف 11ویڈیوز بنوائیں۔ اس کے باوجود وہ آج بھی اس فحش ویب سائٹ کی مقبول ترین اداکاراﺅں میں سے ایک ہے جنہیں سب سے زیادہ سرچ کیا جاتا ہے۔ گزشتہ دنوں میا خلیفہ نے ایک انٹرویو کے دوران اعتراف کیا کہ فحش فلم انڈسٹری میں جانا ان کی زندگی کی سب سے بڑی غلطی تھی اور اب انہوں نے دنیابھر کی لڑکیوں کو اس حوالے سے تنبیہ کر دی ہے۔

ڈیلی سٹار کے مطابق میاخلیفہ نے کہاہے کہ فحش فلم انڈسٹری میںمیرا مختصر سا کیریئر بھی میرے لیے زندگی کا سب سے بڑا پچھتاوا بن گیا ہے۔ میں چاہ کر بھی اس داغ کو دھو نہیں سکتی جو میری ایک غلطی کی وجہ سے مجھ پر لگ گیا۔ میں نے تین ماہ کے کیریئر میں صرف 11ویڈیوز بنوائیں جو زندگی بھر میرا تعاقب کرتی رہیں گی۔ میں لڑکیوں سے التجا کرتی ہوں کہ وہ کبھی بھی فحش فلم انڈسٹری میں جانے کی غلطی مت کریں۔ انہوں نے چند ہفتے قبل بھی لڑکیوں کو اس شرمناک انڈسٹری سے دور رہنے کی درخواست کرتے ہوئے کہا تھا کہ فحش فلم انڈسٹری کے لوگ قانونی معاہدوں کی آڑ میں لڑکیوں کا جنسی، ذہنی و مالی استحصال کرتے ہیں۔ فحش فلموں کی ویب سائٹس کے ساتھ معاہدہ کرنے کے بعد لڑکیوں کی حیثیت ایک جنسی غلام کی بن کر رہ جاتی ہے۔

ٹک ٹاک پر پوسٹ کی گئی ایک ویڈیو میں میا خلیفہ نے کہا ہے کہ میں نے فحش فلم انڈسٹری سے چند ہزار ڈالر کمائے لیکن میری یہ غلطی اب تک مجھے ذہنی و جذباتی طور پر جتنا نقصان پہنچا چکی ہے اس کا ازالہ ناممکن ہے۔ مجھے فحش فلم انڈسٹری سے کنارہ کشی کیے 6سال گزر گئے، ان سالوں میں میں نے اپنے فحش فلموں کی اداکارہ ہونے کے تشخص کو ختم کرنے کے لیے لاکھ جتن کیے لیکن میری یہ شناخت کسی آسیب کی طرح میرا پیچھا کرتی آ رہی ہے اور تب تک کرتی رہے گی جب تک میری موت نہیں ہو جاتی۔

اپنے ایک گزشتہ انٹرویو میں میاخلیفہ یہ دعویٰ بھی کر چکی ہیں کہ انہوں نے پورن حب کے ساتھ اپنے مختصر کیریئر میں صرف12ہزار ڈالر کمائے اور انڈسٹری چھوڑنے کے بعد انہیں ویب سائٹ کی طرف سے کبھی کوئی رقم نہیں دی گئی حالانکہ وہ آج بھی ویب سائٹ پر سب سے زیادہ سرچ کی جانے والی چند اداکاراﺅں میں شامل ہیں۔ اس انٹرویو میں انہوں نے یہ دعویٰ بھی کیا کہ وہ گزشتہ 6سال سے پورن حب اور دیگر فحش فلموں کی ویب سائٹس سے اپنی ویڈیوز ہٹوانے کی کوشش بھی کر رہی ہیں لیکن ہر بار انہیں ناکامی کا منہ دیکھنا پڑا۔

میا خلیفہ لبنان میں ایک کیتھولک مسیحی گھرانے میں پیدا ہوئیں اور کم عمری میں ہی ماں باپ کے ساتھ امریکہ منتقل ہو گئیں۔ اپنے شرمناک کیریئر میں انہوں نے اسلامی حجاب پہن کر ایک ویڈیو بنوائی جس پر مسلم دنیا، بالخصوص مشرق وسطیٰ میں ایک ہنگامہ برپا ہو گیا اور انہیں شدت پسند تنظیم داعش کی طرف سے قتل کی دھمکیاں ملنے لگیں۔ میا خلیفہ بتا چکی ہیں کہ داعش کی دھمکیوں پر وہ ایسی خوفزدہ ہوئی تھیں کہ گھر چھوڑ کر دو ہفتے تک ایک ہوٹل میں قیام پذیر رہیں اور اس دوران انہوں نے فحش فلم انڈسٹری چھوڑنے کا فیصلہ کر لیا۔میا خلیفہ کا کہنا تھا کہ جب مجھے کہا گیا کہ مجھے حجاب پہن کرایک ویڈیو میں کام کرنا ہے تو میرے پیروں تلے زمین نکل گئی۔ میں نے بے ساختہ ان لوگوں سے کہا کہ تم لوگ مجھے قتل کروانا چاہتے ہو؟ مگر انہوں نے کہا کہ مجھے یہ کرنا ہی ہو گا۔ ان کے ساتھ ہونے والے معاہدے کی وجہ سے میں مجبور تھی اور پھر اس ویڈیو کی وجہ سے میرے ساتھ جو ہوا وہ میری زندگی کا کربناک باب ہے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -