وائرل انفیکشنز سے بچنے کے لیے سانس لینے کا درست طریقہ نوبل انعام جیتنے والے ماہر نے بتادیا

وائرل انفیکشنز سے بچنے کے لیے سانس لینے کا درست طریقہ نوبل انعام جیتنے والے ...
وائرل انفیکشنز سے بچنے کے لیے سانس لینے کا درست طریقہ نوبل انعام جیتنے والے ماہر نے بتادیا

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) نوبل انعام یافتہ ماہر لوئس جے ایگنیرو نے کورونا وائرس سے بچنے کے لیے سانس لینے کا ایک طریقہ بتا دیا ہے جس کے متعلق ان کا دعویٰ ہے کہ اس طریقے سے آپ حتی الامکان وائرس سے بچ سکتے ہیں۔ انڈیا ٹائمز کے مطابق سائیکالوجی اور میڈیسن میں نمایاں کارکردگی پر نوبل انعام جیتنے والے لوئس جے ایگنیرو کا کہنا تھا کہ کورونا وائرس یا کسی بھی وائرل انفیکشن سے بچنے کے لیے لوگوں کو ناک سے سانس لینا اور منہ کے ذریعے خارج کرنا چاہیے۔

ان کا کہنا تھا کہ ”جب آدمی ناک سے سانس لیتا ہے تو ان کے ناک کی کیوٹیز نائٹرک آکسائیڈ کے زیادہ مالیکیولز پیدا کرتی ہیں۔ یہ مالیکیولز آدمی کے پھیپھڑوں میں خون کا بہاﺅ تیز کرتے ہیں اور خون میں آکسیجن کی مقدار بڑھاتے ہیں۔ ناک سے سانس لینے سے نائٹرک آکسائیڈ براہ راست پھیپھڑوں تک پہنچی تھی اور پھیپھڑوں میں کورونا وائرس کی افزائش کو روک دیتی ہے۔ اس کے علاوہ نائٹرک آکسائیڈ خون میں رکاوٹ آنے سے بھی روکتی ہے۔ چنانچہ اگر لوگ اس طریقے سے سانس لیں تو ان کے کورونا وائرس سے محفوظ رہنے کے امکانات بہت بڑھ سکتے ہیں۔“

مزید :

بین الاقوامی -