جب وزیراعظم قومی اسمبلی میں اسامہ بن لادن کو شہید قرار دے رہے تھے ،اسی وقت دفتر خارجہ اسامہ کے بارے میں کیا بیان جاری کر رہا تھا ،جان کر پاکستانی عوام کہے گی’سب مل کر ہمیں بے قوف بنا رہے ہیں‘

جب وزیراعظم قومی اسمبلی میں اسامہ بن لادن کو شہید قرار دے رہے تھے ،اسی وقت ...
جب وزیراعظم قومی اسمبلی میں اسامہ بن لادن کو شہید قرار دے رہے تھے ،اسی وقت دفتر خارجہ اسامہ کے بارے میں کیا بیان جاری کر رہا تھا ،جان کر پاکستانی عوام کہے گی’سب مل کر ہمیں بے قوف بنا رہے ہیں‘

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن )قومی اسمبلی میں خطاب کے دوران وزیراعظم عمران خان نے اسامہ بن لادن کو شہید قرار دیا تو دوسری جانب دفتر خارجہ کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ القاعدہ کی ناکامی میں پاکستان کی کاوشوں کو نظر انداز کیا گیا ہے ۔تفصیل کے مطابق ترجمان دفتر خارجہ نے کہا ہے کہ دہشتگردوں کے محفوظ ٹھکانوں سے متعلق امریکی الزامات مسترد کرتے ہیں۔ عائشہ فاروقی نے کہا کہ امریکی رپورٹ میں پاکستان کے دہشت گردی کے خلاف اٹھائے گئے اقدامات کو متنازع بنایا گیا ہے۔ القاعدہ کی خطے میں ناکامی کو تو تسلیم کیا گیا لیکن اس کے خلاف پاکستان کی کاوشوں کو نظر انداز کیا گیا۔ پاکستان میں دہشتگردی کے واقعات میں کمی ثبوت ہے کہ دہشت گرد گروپس کے خلاف بلا تفریق کارروائیاں کی گئیں۔ترجمان نے کہا کہ پاکستان ایک خود مختار ریاست کی حیثیت سے اپنی ذمہ داریوں سے پوری طرح واقف ہے۔ پاکستان کسی بھی گروہ کو ملک کے خلاف اپنی سرزمین استعمال کرنے نہیں دے گا۔ان کا کہنا تھا کہ امریکی رپورٹ اس پر بھی خاموش ہے کہ بیرونی سرپرستی والے دہشت گرد گروپ کہاں سے آپریٹ ہو رہے ہیں؟ ایف اے ٹی ایف ایکشن پلان کے تحت پاکستان کے اقدامات کو بھی تسلیم نہیں کیا گیا۔ امریکی رپورٹ افغان عمل امن کے حوالے سے بھی پاکستان کی خدمات کا احاطہ کرنے میں ناکام رہی ہے۔

واضح رہے کہ قومی اسمبلی میں خطاب کے دوران وزیراعظم نے کہا تھا کہ افغانستان میں ناکامی کی ذمہ داری پاکستان پر ڈالی ،اسامہ بن لادن کو ایبٹ آباد میں مار دیا، شہید کردیا ، اس کے بعد ساری دنیا نے ہمیں گالی نکالی اور ہمیں برا بھلا کہا ۔ہمارا اتحادی ہمارے ملک میں آ کر کسی کو مار رہا ہے اور ہمیں نہیں بتا یا ۔دہشت گردی کے خلاق جنگ میںستر ہزار پاکستانی ان کی جنگ میں مر چکے ۔اس کے بعد ڈرون حملے ہوئے اورپاکستانی حکومت کہہ رہی تھی کہ ہم مذمت کر رہے ہیں ۔

مزید :

قومی -