قومی اسمبلی، سگریٹ پر ٹیکس 100فیصد بڑھانے کا مطالبہ، قسم کھائیں ٹیکس چور کی سفارش نہیں کریں گے: وزیر دفاع

  قومی اسمبلی، سگریٹ پر ٹیکس 100فیصد بڑھانے کا مطالبہ، قسم کھائیں ٹیکس چور کی ...

  

        اسلام آباد (نیوزایجنسیاں) وزیر دفاع خواجہ آصف نے کہا ہے کہ ان حالات میں اچھا بجٹ پیش نہیں کرسکتے تھے حالات دنوں میں بہتری کی طرف چل نکلیں گے ہم نے ٹیکس چوروں کا مقابلہ کرنے کی کوشش کی ہے۔ قسم کھائیں کہ ٹیکس چوروں کی سفارش نہیں کریں گے اورٹیکس چور جو ایوان میں آجاتے ہیں اس کے سامنے بھی بند باندھیں گے۔ عام آدمی سانس  لینے پر بھی ٹیکس دیتاہے مگر کچھ لوگ اربوں روپے لوٹ کر  ایوان میں پہنچ جاتے ہیں۔ان خیالات کااظہار وزیر دفاع خواجہ آصف  نے جمعہ کو قومی اسمبلی  میں ا ظہار خیال کرتے ہوئے کیا۔وزیر دفاع خواجہ آصف نے کہاکہ ہمارے وزیر خزانہ نے مشکل2ماہ گزارے ہیں۔حالات دنوں میں بہتری کی طرف چل نکلیں گے سیگریٹ کی دو بڑی کمپنیوں کے پاس کل  مارکیٹ کا 7فیصد حصہ ہے مگر وہ زیادہ ٹیکس دیتی ہیں اور  باقی پوری انڈسٹری صرف 2ارب روپے ٹیکس دیتی ہے اس لابی کے بندے ان ایوانوں میں موجود ہیں ہم ان کو ٹیکس نہیں کرپارہے ہیں۔درآمدی ڈیوٹی میں 3ارب ڈالر کا خسارہ ہوتاہے۔لوگوں نے کرکٹ ٹیمیں بنائی ہوئی ہیں جہاں گاڑیاں بن رہی ہیں وہاں مہنگی اور پاکستان میں سستی  بیج رہے ہیں۔ ہماری سیاسی برادری ان کی سفارش کرتی ہیں۔مذہبی لوگ بھی ان کی سفارش کرتے ہیں۔قومی اسمبلی میں وفاقی وزیر آبی وسائل سید خورشید شاہ نے سگریٹ کی قیمت 100فیصد بڑھانے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ دنیا کے ترقی یافتہ ممالک میں سگریٹ پینا منع ہے، آج  انگلینڈ  میں ایک سگریٹ کے پیکٹ کی قیمت پاکستانی3500 روپے ہے اور ہمارے پاس آج بھی اچھے سے اچھا برانڈ 110اور 120روپے کا ہے، جس پیکٹ کی قیمت اگر 100روپے ہے اسکی کم سے کم قیمت200روپیہ کرو، ہمیں لوگوں کو بچانا ہے، ٹی بی سے بچانا ہے، ہیپاٹائٹس بی سے بچانا ہے، کینسر سے بچانا ہے، ہم نے کابینہ میں کہا کہ کم سے کم ایک روپیہ فی سگریٹ پر ٹیکس بڑھاؤ، 20روپے پیکٹ پر بڑھاؤ جبکہ پرویز اشرف نے کہا کہ تمباکو نوشی نہ صرف صحت کیلئے مضر ہے بلکہ ہمارے ہیلتھ سیکٹر پر بھی بہت بڑا بوجھ ہے اور آئندہ آنے والی نسلوں کو بچانے کیلئے ہمیں سخت ایکشن  لینا چاہئے اور اس پر ٹیکس لگائیں گے تو قوم خوشی محسوس کرے گی۔ وفاقی وزیر ایاز صادق نے کہا کہ مفتاح اسماعیل نے بہت مشکل حالات میں یہ بجٹ پیش کیا، وزیر خزانہ نے جو بجٹ دیا یہ ساری اتحادی حکومت کابجٹ ہے،مفتاح اسماعیل نے مشاورت سے فیصلے کیے۔ قومی اسمبلی اجلاس میں افغانستان میں زلزلے کے باعث وفات پانے والوں کیلئے دعا کی گئی جبکہ مسلم لیگ(ن) کے رہنماء دانیال عزیز کی صحت یابی کے لئے بھی دعا کرائی گئی۔حکومتی وزراء نے مولاناعبدالاکبر چترالی کو حکومتی نشستوں پر بیٹھنے کی  دعوت دے دی۔سپیکرنے مولاناعبدالاکبر چترالی کو بارباردرخواست کرنے کے باوجود بات کرنے کاموقع نہ دیااور اجلاس ملتوی کردیا۔قومی اسمبلی کااجلاس  پیرکی شام 5بجے تک ملتوی کردیاگیا۔

قومی اسمبلی  

مزید :

صفحہ اول -