ریاستی ملکیتی اداروں کے سالانہ نقصانات کتنے سو ارب روپے تک پہنچ گئے۔۔؟ جانیے

ریاستی ملکیتی اداروں کے سالانہ نقصانات کتنے سو ارب روپے تک پہنچ گئے۔۔؟ جانیے
ریاستی ملکیتی اداروں کے سالانہ نقصانات کتنے سو ارب روپے تک پہنچ گئے۔۔؟ جانیے

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

اسلام آباد ( ڈیلی پاکستان آن لائن)وفاقی ریاستی ملکیتی اداروں کے مالی نقصانات کی رپورٹ سامنے آگئی۔رپورٹ کے مطابق رواں سال ریاستی ملکیتی اداروں کے سالانہ نقصانات 905 ارب روپے تک پہنچ گئے، مالی سال 23-2022 میں نقصانات میں 23 فیصد اضافہ ریکارڈ ہوا ہے۔

توانائی شعبے نے 304 ارب روپے کے نقصانات کیے، حکومت نے توانائی سمیت کئی اداروں کو 1021 ارب روپے کی مالی مدد دی، تقسیم کار کمپنیوں سمیت توانائی شعبے پر759 ارب روپے خرچ کیے گئے۔

"جنگ " کے مطابق رپورٹ میں کہا گیا کہ 10 سال میں ریلویز، این ایچ اے کے نقصانات 5 ہزار 595 ارب روپے سے تجاوز کر گئے، خسارے کی وجہ سے گردشی قرضہ 4 ہزار ارب روپے سے تجاوز کر گیا۔گزشتہ مالی سال بعض سرکاری اداروں نے 703 ارب  روپے منافع بھی کمایا، اس کے نتیجے میں نیٹ نقصانات 202 ارب روپے کی سطح پر آگئے۔

سرکاری اداروں کے اثاثوں کی بک ویلیو 35 ہزار 218 ارب روپے رہی، سرکاری اداروں کے ذمہ واجبات 20 فیصد اضافہ سے 29 ہزار 721 ارب ریکارڈ ہوئے۔