مارچ کے آخر تک بہاریہ مونگ کاشت ہوسکتی ہے: محکمہ زراعت

مارچ کے آخر تک بہاریہ مونگ کاشت ہوسکتی ہے: محکمہ زراعت

لاہور(کامرس رپورٹر)ایسے کاشتکار جو بہاریہ کماد، مکئی یا سورج مکھی کی فصل کاشت نہیں کر سکے وہ مارچ کے آخر تک بہاریہ مونگ کاشت کر سکتے ہیں۔ محکمہ زراعت پنجاب کے ترجمان کے مطابق مونگ کو آبپاش اور بارانی علاقوں میں یکساں طور پر کامیابی کے ساتھ کاشت کیا جا سکتا ہے ۔ کاشتکاربھرپور پیداوار کے لیے آبپاش علاقوں میں مونگ کی ترقی دادہ اقسام نیاب مونگ۔2011،نیاب مونگ۔2006، اور ازری مونگ ۔2006جبکہ بارانی علاقوں میں چکوال ایم ۔6 ہی کاشت کریں۔    ان اقسام کی پیداواری صلاحیت 25من فی ایکڑ تک ہے ۔ کاشتکار مونگ کی ترقی دادہ اقسام کا بیج 10سے 12کلو گرام فی ایکڑ استعمال کریں جبکہ بوائی سے قبل بیج کو جراثیمی ٹیکہ لگائیں اور تر وتر میں ڈرل سے بوائی کریں۔ ترجمان کے مطابق مونگ کی فصل کے لیے کھاد کے حسب ضرورت استعمال کے لیے زمین کا تجزیہ کرانا ضروری ہے ۔زمین کے تجزیہ کی عدم موجودگی میں ایک بوری ڈی اے پی+آدھی بوری پوٹاشیم سلفیٹ یا آدھی بوری یوریا کے ساتھ ایک بوری ٹرپل سپر فاسفیٹ اور آدھی بوری پوٹاشیم سلفیٹ کھاد فی ایکڑ ڈال کر بہتر پیداوار حاصل کی جا سکتی ہے ۔ترجمان نے مزید کہا ہے کہ تمام کھادیں بوائی سے پہلے آخری ہل کے ساتھ استعمال کریں۔

مزید : کامرس