سیدہ فاطمۃ الزھراء کی زندگی اطاعت الٰہی کا بہترین نمونہ تھی،علامہ تصور نقوی

سیدہ فاطمۃ الزھراء کی زندگی اطاعت الٰہی کا بہترین نمونہ تھی،علامہ تصور نقوی

 لاہور(نمائندہ خصوصی)سیدہ فاطمۃ الزھراء اولین و آخرین میں افضل ترین خاتون ہیں ، اسی لئے آپ کوسیدۃ النساء العالمین کے لقب سے نواز گیا، ان خیالات کا اظہار ریاستی سیکرٹری جنرل مجلس وحدت مسلمین رہنما علامہ سید تصور حسین نقوی الجوادی نے یوم شہادت حضرت فاطمہ سلام اللہ علیھا کے موقع پر مجلس عزاء سے خطاب کرتے ہوئے کیا ، انہوں نے کہا کہ سیدہؑ کائنات کی افضل ترین خاتون، رسول ؐ اسلام کی پارہ جگر دختر گرامی کی سیرت ہر دور میں قابل تقلید نمونہ ہے ، آپ ؑ اسوہ نبوی ؐ کی عملی پیکر اور امت محمدیؐ کے لیئے اسوہ کی حیثیت رکھتی ہیں    ، آپ کی زندگی اطاعت الہی کا بہترین نمونہ تھی، اپنے پدر گرامیؐ کی تربیت کا اثر تھا کہ آپؑ نے معاشرے میں ایک مثالی بیٹی، مثالی ماں اور مثالی زوجہ کا کردار ادا کیا ۔ آپؑ کی عزت و توقیر اس درجہ تھی کہ کتب احادیث میں مرقوم ہے کہ آپؑ جب تشریف لاتیں تھیں ، تو اللہ کے رسولؐ احترام کے لیئے کھڑے ہو جاتے ، پیشانی کا بوسہ لیتے اور اپنی جگہ بٹھاتے ، آپ علمی اعتبار سے اس مقام پر تھیں کہ کوئی سوال درپیش ہوتا تو وہ آپ کے دروازے سے معلوم کیا جاتا تھا، رسولؐ اسلام سے آپکی انسیت کی حد یہ تھی کہ صحابہ کرامؓ کو اگر رسولؐ اللہ سے کوئی ضروری کام کروانا ہوتا یا کسی مشکل کا حل ڈھونڈنا ہوتا تو وہ درِ زھراؑ پر آکر آپ کو توسل قرار دے کر کہتے بی بیؑ اپنے باباؐ سے ہماری سفارش کریں تو رسول اسلام کبھی آپ کو مسترد نہ کرتے بلکہ فرماتے اے فاطمہ ؑ تیری رضا خدا کی رضا اور تیرا غضبناک ہونا خدا کو غضبناک کرنا ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1