پاکستان نے کشمیریوں کو مسئلہ کا فریق بنا کر بھارت کے منہ پر تھپڑ رسید کیا ،حافظ سعید

پاکستان نے کشمیریوں کو مسئلہ کا فریق بنا کر بھارت کے منہ پر تھپڑ رسید کیا ...

شیخوپورہ( اے این این)امیر جماعۃ الدعوۃ پاکستا ن پروفیسر حافظ محمد سعیدنے کہا ہے کہ نظریہ پاکستان سے انحراف کی وجہ سے ملک میں فرقہ وارانہ قتل و غارت گری اور لسانیت پرستی پروان چڑھی۔مذہبی و سیاسی جماعتوں اور تمام مکاتب فکر کو متحد ہو کرنظریہ پاکستان کے احیاء کی تحریک چلانی چاہیے۔ کشمیر پاکستان کی شہ رگ ہے‘ دفاع پاکستان کیلئے اسے غاصب بھارت کے قبضہ سے چھڑانا انتہائی ضروری ہے ،پاکستان نے کشمیریوں کو فریق بنا کر بھارت کے منہ پر تھپڑ رسید کیا ہے ،کشمیریوں کو شامل کئے بغیر بھارت سے مذاکرات نتیجہ خیز نہیں ہو سکتے،بیرونی قوتیں نوجوان نسل کے دل و دماغ سے نظریہ پاکستان محو کرنے کی سازشیں کر رہی ہیں۔وہ شیخوپور ہ کے مقامی شادی ہال میں کارکنان کی تربیتی نشست سے خطاب کر رہے تھے۔ اس موقع پر جماعۃالدعوۃ کے مرکزی رہنمامولانا سیف اللہ خالد، مولانا نصر جاوید، خالد سیف الاسلام، شاکراللہ و دیگر نے خطاب کیا۔ جماعۃالدعوۃ کے سربراہ حافظ محمد سعید نے اپنے خطاب میں کہاکہ انڈیا اقوام متحدہ کی قراردادوں کی مسلسل خلاف ورزیاں کر رہا ہے اور بین الاقوامی قوانین کی دھجیاں بکھیری جارہی ہیں۔پورے کشمیر کو جیل میں تبدیل کر کے رکھ دیا گیا ہے۔آٹھ لاکھ بھارتی فوج کشمیر کے گلی کوچوں میں تعینات ہے اور مظلوم کشمیریوں کی عزتیں و حقوق کچھ بھی محفوظ نہیں ہے۔ شہداء کی تعداد لاکھوں میں پہنچ چکی ہے۔پاکستان کو چاہیے کہ وہ خارجہ ڈیسک کو متحرک کرے اور عالمی سطح پرمسئلہ کشمیر کو بھرپور انداز میں اجاگر کیا جائے۔انہوں نے کہاکہ بھارت پاکستان سے مذاکرات کی آڑ میں ہمیشہ دھوکہ دہی سے کام لیتا ہے۔ کشمیر ہمارا اصل ایشو ہے اسے الگ رکھ کر بھارت سے کوئی بات نہیں کرنی چاہیے۔ مظلوم کشمیری پاکستان کو اپنا سب سے بڑا وکیل سمجھتے ہیں۔ کشمیر کے پاکستان سے گہرے رشتے ہیں اور ہم کسی صورت یہ رشتہ نہیں توڑ سکتے، ہمیں یواین کی قراردادوں کو بنیاد بنا کربھارت سے بات کرنی چاہیے۔

مزید : صفحہ اول