بچپن میں مینڈک کھانے کا شوق چینی خاتون کو بے حد مہنگا پڑا ، ڈاکٹروں کو اس کے دماغ میں کیا ملا ؟ جانئے

بچپن میں مینڈک کھانے کا شوق چینی خاتون کو بے حد مہنگا پڑا ، ڈاکٹروں کو اس کے ...
بچپن میں مینڈک کھانے کا شوق چینی خاتون کو بے حد مہنگا پڑا ، ڈاکٹروں کو اس کے دماغ میں کیا ملا ؟ جانئے

  

بیجنگ (نیوز ڈیسک) چینی شہر ژو یانگ سے تعلق رکھنے والے 29 سالہ ژین مینگ گزشتہ 6 سال سے سردرد میں مبتلا تھیں جو کبھی بہت کم ہوتا تو کبھی بہت شدید ہوجاتا۔ ژین مینگ اور ان کے گھر والے اس بیماری کے علاج کے لئے کافی تگ و دو کرچکے تھے مگر کسی کو بھی اس کی سمجھ نہیں آرہی تھی۔ بالآخر جب اس خوفناک درد کی وجہ سے ژین مینگ کو یاﺅ یینگ کاﺅنٹی ہسپتال لے جایا گیا تو ڈاکٹروں نے معلوم کیا کہ خاتون کے دماغ میں کوئی چیز موجود ہے جو شدید درد کا باعث بن رہی ہے۔ ابتدائی طور پر ڈاکٹر خطرناک آپریشن کے لئے تیار نہ تھے لیکن بالآخر جب آپریشن کیا گیا تو خاتون کے دماغ سے برآمد ہونے والی چیز نے ہر دیکھنے والے کو دہلا دیا۔ ڈاکٹروں نے طویل آپریشن کے بعد ژین مینگ کے دماغ سے 10 سینٹی میٹر لمبا طفیلی کیڑا نکال لیا جس کی حرکت کی وجہ سے ناقابل برداشت تکلیف پیدا ہورہی تھی اور یہ خاتون کے عصبی نظام کو بھی تباہ کررہا تھا۔

خواتین کے ساتھ جنسی زیادتی کی خبر یں تو اکثر آتی ہیں لیکن اس نوجوان لڑکی نے ایسا خوفناک قدم اٹھا یا جو کسی بھی لڑکے کے ہوش اڑا دے

جب خاتون کو اس کے دماغ سے نکلنے والے کیڑے کے بارے میں بتایا گیا تو اس نے حیرت انگیز انکشاف کیا کہ وہ بچپن میں اپنی دادی کے ساتھ جنگل میں جایا کرتی تھی اور وہاں چھوٹے چھوٹے زندہ مینڈک پکڑ کر کھایا کرتی تھی۔ ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ طفیلی کیڑوں کے انڈے آلودہ پانی یا سانپوں اور مینڈکوں کے جسم میں پائے جاتے ہیں اور ان چیزوں کو بطور خوراک استعمال کرنے والوں کے جسم میں منتقل ہوجاتے ہیں۔ یہ کیڑے عموماً کئی سال تک آنکھ یا دماغ جیسے اعضاءمیں پرورش پاتے رہتے ہیں اور موت کا باعث بھی بن سکتے ہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس