کہیں جماعتی ،کہیں غیر جماعتی بلدیاتی الیکشن جمہوریت کی نفی ہیں ،ہائی کورٹ نے اٹارنی جنرل ،ایڈووکیٹ جنرل طلب کرلئے

 کہیں جماعتی ،کہیں غیر جماعتی بلدیاتی الیکشن جمہوریت کی نفی ہیں ،ہائی کورٹ ...
 کہیں جماعتی ،کہیں غیر جماعتی بلدیاتی الیکشن جمہوریت کی نفی ہیں ،ہائی کورٹ نے اٹارنی جنرل ،ایڈووکیٹ جنرل طلب کرلئے

  

  لاہور (نامہ نگار خصوصی) لاہور ہائیکورٹ نے قرار دیا ہے کہ ایک ہی ملک میں ایک ہی آئین کے تحت کچھ علاقوں میں غیرجماعتی اور دیگر علاقوں میں جماعتی بنیادوں پر بلدیاتی انتخابات جمہوریت کی سنگین خلاف ورزی ہے ، مسٹر جسٹس سید منصور علی شاہ نے یہ ریمارکس کنٹونمنٹ علاقوں مبینہ غیرشفاف وارڈ سکیموں اور ووٹرز فہرستوں کے خلاف دائر درخواست پرحکومت ، اٹارنی جنرل اور ایڈووکیٹ جنرل پنجاب کو طلبی کے نوٹس جاری کرتے ہوئے دیئے ۔عدالت نے کنٹونمنٹ علاقوں بلدیاتی انتخابات سے متعلق تمام درخواستوں کو بھی یکجا کرنے کا بھی حکم دیدیا ہے۔یہ درخواست کنٹونمنٹ ایریا لاہور کے رہائشی نعیم احمد نے دائر کی ہے ۔

وزیر خزانہ کی اسلامک بینکنگ کی حمایت،معیشت پر مثبت اثرات مرتب ہوئے:اسحا ق ڈار

درخواست گزار کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ بلدیاتی انتخابات کے لئے کنٹونمنٹ ایکٹ کی دفعہ 6 اور7 کے تحت نئی وارڈ سکیمیں اور ووٹر فہرستیں تیار کی جانی تھیںاور ان پر مقامی رہائشیوں کی طرف اعتراضات سنے جانے تھے تاکہ بلدیاتی انتخابات شفاف ہوں تاہم الیکشن کمیشن نے قانون کی سنگین خلاف ورزی کرتے ہوئے ملک بھر میں کنٹونمنٹ بورڈ ز میں بلدیاتی انتخابات کرانے کے لئے 50ریٹرننگ افسروں کی تعیناتی کا نوٹیفکیشن جاری کیا ہے ،شفاف وارڈ سکیمیں اور ووٹرفہرستیں تیار ہونے تک کنٹونمنٹ علاقوں میں بلدیاتی انتخابات روکے جائیں ،پنجاب حکومت کی طرف سے اسسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل پنجاب انوار حسین نے عدالت کو آگاہ کیا کہ کنٹونمنٹ علاقوں میں بلدیاتی انتخابات صوبے کا نہیں بلکہ وفاق کا معاملہ ہے ،عدالت نے قرار دیا کہ کنٹونمنٹ علاقوں میں بلدیاتی انتخابات ایک اہم آئینی معاملہ ہے، ایک ہی ملک میں ایک ہی آئین کے تحت دوطرح کے بلدیاتی انتخابات کروانا جمہوریت کی سنگین خلاف ورزی ہے، کیا کنٹونمٹ کے علاقے سے منتخب ناظم اپنی مرضی سے سڑک اکھاڑنے یا تعمیر کرنے کی جرات کر سکے گا، فاضل جج نے مزید قرار دیا کہ عدالت اس بات کا آئینی جائزہ لینا چاہتی ہے کہ کنٹونمٹنٹ علاقوں میں بلدیاتی انتخابات کی حیثیت کیا ہوگی، عدالت نے اس کیس کی مزید سماعت کے لئے 26مارچ کی تاریخ مقرر کی ہے ۔

مزید : لاہور