مردم شماری طریقہ کیخلاف پی پی پی کی درخواست، وفاق،سندھ حکومت کو نوٹس

مردم شماری طریقہ کیخلاف پی پی پی کی درخواست، وفاق،سندھ حکومت کو نوٹس

کراچی(این این آئی)سندھ ہائی کورٹ نے پیپلزپارٹی کی جانب سے مردم شماری میں سندھ میں رہائش پذیرغیر ملکیوں کوشامل کرنے کیخلاف دائر درخواست پر وفاق اور سندھ کو نوٹس جاری کرتے ہوئے سماعت 3اپریل تک ملتوی کر دی ۔تفصیلات کے مطابق سندھ ہائیکورٹ میں پیپلزپارٹی کی جانب سے مردم شماری کے موجودہ طریقہ کار کیخلاف درخواست کی سماعت ہوئی ، پیپلزپارٹی کی جانب سے وکیل فاروق ایچ نائیک پیش ہوئے۔پیپلز پارٹی نے درخواست میں موقف اپنایا کہ مردم شماری غیر منصفانہ ہو رہی ہے، مردم شماری کے عمل میں آئین کے آرٹیکل 2,4اور 19کی صریحاً خلاف ورزی کی جا رہی ہے۔مردم شماری کے عمل میں سندھ میں رہائش پذیر غیر ملکیوں کو بھی سندھ کے باسیوں کے طور پر گنا جا رہا ہے جو غلط ہے۔عدالت نے فاروق ایچ نائیک کو آئندہ سماعت پر درخواست قابل سماعت ہونے پر دلائل دینے کا حکم دینے سمیت وفاق و سندھ حکومت کو نوٹس جاری کرتے ہوئے سماعت 3 اپریل تک ملتوی کر دی ۔ سماعت کے بعد میڈیا سے گفتگو میں فاروق ایچ نائیک کا کہنا تھا ہم نے معلومات کوخفیہ رکھنے کے قانون اور اسٹیٹکس ری آرگنائزیشن ایکٹ 2011 ء کو چیلنج ،مردم شماری میں غیرملکیوں کوشامل کرنے پراعتراضات اٹھائے ہیں،یہ وفاق اور صوبہ میں اختلافات کا معاملہ نہیں ہم نے شفافیت کیلئے درخواست دائر کی ہے۔آدم شماری میں شفافیت نہ ہوئی تو بہت مسائل درپیش ہونگے ۔ آصف علی زرداری مفاہمت پر قائم ہیں، امریکیوں کو ویزا جاری کرنے کے حوالے سے فاروق نائیک نے یوسف رضا گیلانی کے خط کے حوالے سے لاعلمی کا اظہار کیا ۔

مزید : کراچی صفحہ اول


loading...