گرلز سکولوں میں میل ٹیچرز کی ڈیوٹی لگانے پر اساتذہ تنظیمیں سراپا احتجاج

گرلز سکولوں میں میل ٹیچرز کی ڈیوٹی لگانے پر اساتذہ تنظیمیں سراپا احتجاج

الپوری(ڈسٹرکٹ رپورٹر) شانگلہ شاہ پور گرلز سیکنڈری سکول میں مرد اساتذہ کی ڈیوٹی لگانے پر مختلف اساتذہ تنظیموں اور ماہرین تعلیمات سوات تعلیمی بورڈکے انتظامیہ پربرس پڑیں۔فی میل سکولوں میں میل ٹیچر کی تعیناتی پختون روایات،علاقا ئی رواج ، مذہب و روایات کے خلاف ایک سازش یا منصوبہ ،سوات تعلیمی بورڈ کے اندر ایک واحد سکول میں اس تعنیاتی سے کئے سوالات نے جنم لیا،طالبات کے سکول میں میل اساتذہ کی ڈیوٹیاں جرم یا نوازش ،علاقے کے لوگوں میں چی میگوئیاں،میل حضرات کی ڈیوٹیاں منسوخ کر کے فی الفور فیمل کی ڈیوٹیاں لگانے کا مطالبہ۔ شاہ پور گرلز سیکنڈری سکول میں جاری سوات بورڈ کے میٹرک امتحانات میں استانیوں کے بجائے مرد اساتذہ کی ڈیوٹی لگانا سوات بورڈ کی نااہلی ثابت کرتی ہے ،سوات بورڈ امتحانات کی مد میں طالبات سے بھاری فیسیں وصول کر تی ہیں اور اپنی ذمہ داری پوری نہیں کرتے ہے،ماہر تعلیمات کا کہنا تھا کہ شانگلہ میں فی میل تعلیم کی شرح پہلے سے بہت کم ہے اس طرح کی حالات اور واقعات جلتی پر تیل کاکام دے گی اور والدین اپنے بچیوں کو یا تو سکول سے نکالیں گے اور یا پھر سال بھر کے محنت کے بعد امتحان سے ان بچیوں کو رکے گے جس سے تعلیمی انحطاط میں مزید اضافہ ہو گا ۔ماہرین کا کہنا تھا کہ تعلیم ہر انسان کا بنیادی آئینی حق اور ریاست کی ذمہ ذمہ داری ہے مگر ہمارے معاشرے میں تعلیم کا محکمہ ان لوگوں کے سپرد کیا گیا ہے جنہیں خود تعلیم کا پتہ نہیں ،ایسے میں تعلیم کا کیا بنے گا؟دوسری طرف ماہرین نے حکومت سے پرزور مطالبہ کیا ہے کہ وہ شانگلہ کیلئے علحٰیدہ تعلیمی بورڈ کی منظور ی دیں کیونکہ سوات کی تعلیمی بورڈ پر شاید کام کا بوجھ بڑھ چکا ہے جو دانستہ طور پر ایسے غلطیوں کے مرتکب ہو رہے ہے جس سے پریشانی بڑھ سکتی ہے ۔

مزید : کراچی صفحہ اول


loading...