میلسی قرنطینہ میں پہلے مشتبہ مریض کی انٹری، اہل خانہ پربھی پابندیاں

میلسی قرنطینہ میں پہلے مشتبہ مریض کی انٹری، اہل خانہ پربھی پابندیاں

  



میلسی(تحصیل رپورٹر)میلسی میں کرونا وائرس کے سلسلہ میں قائم کیئے گئے قرنطینہ میں کرونا وائرس کے مرض میں مبتلا(بقیہ نمبر26صفحہ12پر)

مشتبہ پہلا شخص آگیا، انتظامیہ نے تحصیل کونسل میلسی کی عمارت میں قائم قرنطینہ سنٹر کو سیل کر دیا۔بتایا گیا ہے کہ نواحی علاقہ موچی پور کا رہائشی 23 سالہ نوجوان عمر فاروق لاہور میں کپڑے کی ایک مشہور برانڈ کے مالک کے ہاں باورچی تھا اور اسی دوران مبینہ طور پر وہ کرونا وائرس کے مرض میں مبتلا ہو گیا جسے مالک نے فوری طورپر لاہور سے واپس گھر بھیج دیا اور عمر فاروق 2 بسیں تبدیل کر کے میلسی کے نواحی علاقہ موچی پور پہنچا اور اپنے اہل خانہ کے ہمراہ رہنے لگا اس دوران گذشتہ شب ضلعی انتظامیہ کو اس بارے علم ہوا تو اسسٹنٹ کمشنر میلسی انور علی کانجو کی سربراہی میں محکمہ صحت کی ٹیم نے مذکورہ نوجوان کو اپنی تحویل میں لے لیا اور علامات کے پیش نظر اس کا کرونا وائرس کا ٹیسٹ لیا گیا اور مذکورہ نوجوان کو میلسی میں قائم کیئے گئے قرنطینہ سنٹر واقع تحصیل کونسل میلسی میں شفٹ کر دیا گیا جبکہ دیگر اہل خانہ کو گھر سے باہر نکلنے سے روکنے کیلئے پولیس کا مسلح دستہ اس کے گھر واقع موچی پور میں تعینات کر دیا گیا ڈپٹی ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر ڈاکٹر راؤ محمد خلیل نے صحافیوں کو بتایا کہ مذکورہ شخص کا نئے سرے سے ٹیسٹ لیا گیا ہے اور اس کی رپورٹ آئندہ چند گھنٹوں میں موصول ہونے کی توقع ہے تا ہم نوجوان کو قرنطینہ سنٹر میں منتقل کر دیا گیا ہے دوسری جانب انتظامیہ نے میلسی کے قرنطینہ سنٹر کے آنے والے پہلے مریض کے بعد تحصیل کونسل کی عمارت کو مکمل طور پر سیل کر دیا ہے۔

انٹری

مزید : ملتان صفحہ آخر