رحیم یارخان: مخالفین کی فائرنگ سے نوجوان، دوراہگیر زخمی

رحیم یارخان: مخالفین کی فائرنگ سے نوجوان، دوراہگیر زخمی

  



رحیم یارخان (بیورورپورٹ)صلح کے بہانے بلاکر جان سے ماردینے کی خاطر اندھا دھند فائرنگ‘ ٹانگ اور بازو میں گولی لگنے سے نوجوان شدید زخمی ہوگیا‘دو راہگیر بھی فائرنگ کی زد میں آکر زخمی ہوگئے‘۔ تفصیل کے مطابق زاہد خان عرف خانی نے میڈیا سے بات(بقیہ نمبر15صفحہ12پر)

کرتے ہوئے بتایا کہ اس کی میاں فرازکے ساتھ پرانی رنجش چلی آرہی تھی کہ گذشتہ روز میاں فراز نے اسے صلح کے بہانے بلا کربستی سلطان لے گیا اور وہاں پر طے شدہ منصوبے کے تحت اس کے ساتھی وقاص عرف میدا‘ نیک محمد عرف کالاگوپانگ‘ علی رضا‘ چوہدری حمزہ ودیگر 6نامعلوم افراد مکان میں چھپے بیٹھے تھے جنہوں نے مجھے دیکھتے ہی جان سے ماردینے کی خاطر اندھا دھند فائرنگ کردی۔ فائرنگ کے نتیجہ میں دو فائر اس کی ٹانگ اور بازو میں لگے جس سے وہ شدید زخمی ہوگیا جبکہ دو راہگیر بھی فائرنگ کی زد میں آکر زخمی ہوگئے۔ فائرنگ کے بعد ملزمان موقع سے فرار ہوگئے جبکہ اہل علاقہ نے طبی امداد کیلئے ہمیں ہسپتال منتقل کردیا۔ زاہد خان عرف خانی نے کہا کہ موقع پر موجود لوگوں نے پولیس ہیلپ لائن 15پر کال بھی کی تھی لیکن پولیس موقع پر نہ آئی۔ بعدازاں ہسپتال میں بھی پولیس نے ہمارے بیان ریکارڈ کئے اور نہ ہی نقشہ مضروبی بنایا بلکہ الٹا میرے سمیت میرے بھائیوں پر ایف آئی آر درج کردی۔ زاہد خان نے آئی جی پنجاب‘ آر پی او بہاولپور اور ڈی پی او رحیم یارخان سے مطالبہ کیا کہ اس کا میڈیکل کروا کر ملزمان کے خلاف مقدمہ درج کیا جائے اور اس پر درج جھوٹی ایف آئی آر خارج کرتے ہوئے اسے انصاف فراہم کیا جائے۔

زخمی

مزید : ملتان صفحہ آخر