انسداد کرونا کیلئے چین کے سوا پوری دنیا سے ہمیں کچھ نہیں مل رہا، نیشنل ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی

انسداد کرونا کیلئے چین کے سوا پوری دنیا سے ہمیں کچھ نہیں مل رہا، نیشنل ...

  



اسلام آباد(آن لائن)چیئرمین این ڈی ایم اے لیفٹیننٹ جنرل محمد افضل نے کہا ہے کہ پاکستان کے پاس 2200 وینٹی لیٹرز موجود ہیں لیکن آپریشنل حالت میں 50فیصد بھی نہیں ہیں، کل سے ماسک اور دیگر سامان آنا شروع ہوجائے گا۔سینئر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے چیئرمین این ڈی ایم اے لیفٹیننٹ جنرل محمد افضل نے بتایا کہ اس وقت پاکستان میں 2200وینٹی لیٹرز موجود ہیں لیکن اگر ان کی ضرورت پڑی تو ہمارے پاس آپریشنل حالت میں 50 فیصد بھی میسر نہیں ہوں گے۔انہوں نے بتایا کہ بدقسمتی سے چین کے علاوہ پوری دنیا سے ہمیں کچھ نہیں مل رہا، روزانہ تین سے چار دفعہ چینی سفیر کو کال کرتا ہوں تو تب جا کر ہمیں راستہ مل رہا ہے کہ وہ اپنی فیکٹریوں کو ہدایات دے رہے ہیں کہ پاکستان کو ترجیحی بنیادوں پر سامان مہیا کیا جائے۔چیئرمین این ڈی ایم اے نے بتایا کہ کل سے ایک ملین ماسک آنا شروع ہوجائیں گے، جس میں 50ہزار این 95ماسک بھی ہوں گے، پرسوں 30 ہزار کے قریب ڈاکٹرز کیلئے اشیا آئیں گی، 50ہزار ٹیسٹنگ کٹس بھی آجائیں گی۔ 28مارچ کو ہم چین کے ساتھ ایک دن کیلئے بارڈر کھولیں گے۔ پاکستانی امپورٹرز سے کہا ہے کہ اپنے آرڈر بک کریں اور جو لاسکتے ہیں لے کر آئیں میں انہیں سہولت دوں گا۔ چین میں کچھ کمپنیوں کے پورے سال کی پروڈکشن یورپ اور خلیجی ممالک نے بک کرلی ہے، ہم نے بھی بہت سے آرڈرز بک کرالیے ہیں۔دریں اثناچیئرمین این ڈی ایم اے نے دبئی اور دوحا سے وطن واپس آنے والے شہریوں میں کورونا وائرس کی علامات نہ ہونے کی تصدیق کی ہے۔ انہوں نے بتایاکہ24 گھنٹوں میں مختلف سرکاری محکموں اورہسپتالوں کوحفاظتی سامان دیا گیا،ابتدا میں ڈاکٹروں اور ہیلتھ ورکرز کو ذاتی بچاؤ کا سامان دیا جا رہا ہے۔

محمد افضل

مزید : صفحہ آخر