چین نے کرونا مرض کے پھیلا ؤ کے دوران 1لاکھ 82ہزار ٹن طبی فضلہ تلف کیا

چین نے کرونا مرض کے پھیلا ؤ کے دوران 1لاکھ 82ہزار ٹن طبی فضلہ تلف کیا

  



بیجنگ(شِنہوا)چین کی وزارت ماحولیات اور ماحول (ایم ای ای)کے مطابق چین میں جنوری کے آخر سے نوول کرونا وائرس وبائی مرض کے خلاف جنگ کے موقع پر 1لاکھ 82 ہزار ٹن طبی فضلہ تلف کیا گیا ہے۔ایم ای ای نے ایک بیان میں کہا ہے کہ 21 مارچ کو چین کی طبی فضلہ تلف کرنے کی استعداد 6,066.8 ٹن روزانہ تک پہنچ گئی ہے جو وبائی مریض سے قبل 4,902.8 روزانہ تھی۔بیان کے مطابق وبائی مرکزی مقام صوبہ ہوبے کی فضلہ تلف کرنے کی استعداد وبائی مرض کے پھیلا سے قبل 180 ٹن روزانہ سے 667.4 ٹن تک پہنچ گئی ہیں۔وزارت نے کہا ہے کہ اس وقت چین میں طبی فضلہ جات کو ٹھکانے لگانے کا کام مستحکم اور منظم طریقے سے سرانجام دیا جا رہا ہے جبکہ جراثیم کش اقدامات پر بھی سختی سے عمل کیا جاتا ہے۔ماحولیاتی حکام نے ملک میں پینے کے پانی کے 21ہزار 399 سروے کئے ہیں اورانہیں پانی کے ذرائع کے معیار میں وبائی مرض کے کوئی اثرات نہیں ملے۔ایم ای ای نے337شہروں کا ہوا کی معیار مانیٹر کیا اور اس میں بہتری کا پتہ لگایا جبکہ 20 جنوری سے 21 مارچ تک اچھی معیاری ہوا کا حصہ 86.3فیصد رہا جو کہ گزشتہ سال کی نسبت 8.8فیصد پوائنٹس زیادہ ہے۔

مزید : عالمی منظر