بھارت میں جنتا کرفیو کے دوران پیدا ہونیوالی بچی کا نام ہی کورونا رکھ دیا گیا

بھارت میں جنتا کرفیو کے دوران پیدا ہونیوالی بچی کا نام ہی کورونا رکھ دیا گیا
بھارت میں جنتا کرفیو کے دوران پیدا ہونیوالی بچی کا نام ہی کورونا رکھ دیا گیا

  



نئی دہلی (ویب ڈیسک) چین سے پھیلنے والے خطرناک ترین کورونا وائرس نے جہاں دنیا بھر میں تباہ کاریاں مچا رکھی ہیں وہیں کچھ عجیب واقعات بھی دیکھنے میں آرہے ہیں جن میں کہیں کورونا کا پتلا بناکر جلایا جارہا ہے تو کہیں اس کے خاتمے کے لیے گانے گائے جارہے ہیں۔

بھارتی میڈیا کے مطابق ریاست اتر پردیش میں جنتا کرفیو کے دوران ایک لڑکی کی پیدائش ہوئی اور والدین نے اس نومولود کا نام "کورونا" رکھا ہے۔بھارت میں 22 مارچ کو جنتا کرفیو نافذ ہوا تھا جس میں حکومت نے عوام کو گھروں میں رہنے کا حکم دیا تھا، اس جنتا کرفیو کے نافذ ہونے کے چند گھنٹے بعد ہی اتر پردیش میں ایک لڑکی کی پیدائش ہوئی جس کا نام کورونا رکھا گیا۔بچی کے نام کی وضاحت کرتے ہوئے اس کے رشتے دار کا کہنا تھا کہ یہ وائرس بہت خطرناک ہے، اس نے دنیا میں بے شمار لوگوں کی جانیں لی لیکن اس نےہمارے اندر بے شمار اچھی عادات بھی پیدا کر دی ہیں۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ 'یہ بچی دنیا بھر میں اس وائرس سے لڑنے والے لوگوں کی یکجہتی کی علامت ہے'۔بھارت میں اب تک کورونا وائرس کے کیسز کی تعداد 500 سے تجاوز کرگئی ہے جب کہ 10 اموات ہوچکی ہیں۔دنیا بھر میں کورونا وائرس سے ہلاکتوں کی تعداد 18 ہزار 907 ہوگئی ہے جب کہ وائرس سے متاثرہ مریضوں کی تعداد 4 لاکھ سے تجاوز کر گئی ہے۔

مزید : بین الاقوامی /کورونا وائرس