خواتین کی غیر اخلاقی ویڈیوز بنا کر اُنہیں بلیک میل کرنے والے ایف آئی اے اہلکار پکڑے گئے

خواتین کی غیر اخلاقی ویڈیوز بنا کر اُنہیں بلیک میل کرنے والے ایف آئی اے ...
خواتین کی غیر اخلاقی ویڈیوز بنا کر اُنہیں بلیک میل کرنے والے ایف آئی اے اہلکار پکڑے گئے

  


لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) ایف آئی اے کا مقصد پاکستان کے شہریوں کو سائبر کرائمز اور دیگر ایسے جرائم سے بچانا تھا لیکن اب ایف آئی اے کے اندر ایک ایسے گروہ کا انکشاف سامنے آ گیا ہے جو خواتین کی غیراخلاقی ویڈیوز بنا کر انہیں بلیک میل کرنے کا گھناﺅنا دھندا کر رہا تھا۔ نجی ٹی وی چینل اے آر وائی نیوز کے مطابق یہ انکشاف ایف آئی اے کے سرکل انچارج سجاد مصطفی باجوہ نے کیا ہے۔ انہوں نے بتایا ہے کہ ’ایف آئی اے کے سائبر کرائم ونگ کے اندر اہلکاروں کا ایک ایسا گروہ موجود تھا جو خواتین کی قابل اعتراض ویڈیوز اور تصاویر بنا کر انہیں بلیک میل کر رہا تھا اور ان سے رقوم ہتھیار رہا تھا۔ ان اہلکاروں کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔“

ذرائع کے مطابق یہ گروہ خواتین ہی نہیں بلکہ مردوں کو بھی اپنا نشانہ بنارہا تھا اوراس مقصد کے لیے انہوں نے پروفیشنل خواتین کو اپنے ساتھ ملا رکھا تھا۔ یہ خواتین امیر لوگوں سے دوستی کرتیں اور انہیں اپنی قابل اعتراض ویڈیوز اور تصاویر موبائل فون پر بھیجتیں۔ بعد ازاں اس گروہ کے اہلکاروں کو کہہ کر ان کے خلاف جھوٹے مقدمات درج کروا دیتیں۔ یوں یہ گروہ مردوں کو گرفتار کر لیتا اور ان سے بھاری رقوم لے کر انہیں چھوڑ دیتا۔سجاد باجوہ کا کہنا تھا کہ ”ہم ایف آئی اے کے اہلکاروں کو ہدایت کرتے ہیں کہ ایسے کسی دھندے میں ملوث نہ ہوں، ورنہ ان کے خلاف سخت قانونی کارروائی کی جائے گی۔ آج کے بعد کسی بھی شہری کی شکایت پر ڈیپارٹمنٹ کے سربراہ کی منظوری سے کسی ملزم کے خلاف ایف آئی آر درج ہو گی اور پھر اس کی گرفتاری عمل میں لائی جائے گی۔“

مزید : علاقائی /پنجاب /لاہور