ارجنٹائن ،گائے کے معدے میں پیدا ہونے والی زہریلی گیس سے گاڑیاں چلائی جائیں گی

ارجنٹائن ،گائے کے معدے میں پیدا ہونے والی زہریلی گیس سے گاڑیاں چلائی جائیں گی

بیونس آئرس(اے پی پی) ارجنٹائن میں سائنسدانوں نے متبادل توانائی کا نیا ماحول دوست طریقہ متعارف کرا دیا ہے ۔ ذرائع ابلاغ کے مطابق اس طریقے میں گائے کے معدے میں پیدا ہونے والی زہریلی گیس کو قابل استعمال بنا کر اس سے گاڑیاں چلائی جائیں گی۔ ارجنٹائن کے نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف ایگری کلچر ٹیکنالوجی میں ماہرین قدرتی گیس بنانے کی تیاری کر رہے ہیں۔ جس کیلئے وہ گائے کا استعمال کر رہے ہیں ۔ ان سائنسدانوں نے ایک ایسا طریقہ متعارف کرایا ہے جس کی مدد سے گائے کے معدے میں پیدا ہونے والی زہریلی گیس کو ایک پائپ کی مدد سے سلینڈر میں منتقل کیاجاتا ہے جس سے پھر قدرتی گیس بنائی جاتی ہے ۔

 لیبارٹری میں بننے والی اس قدرتی گیس سے گاڑی کو چلانے کا بھی ظاہرہ کیا گیا ہے ۔ ماہرین کے مطابق اس طریقہ کار سے روزانہ ایک گائے سے اڑھائی سو سے تین سو لیٹر تک قدرتی گیس بنائی جا سکتی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ اس ٹیکنالوجی کو مکمل طور پر قابل استعمال بنانے کیلئے تجربات کئے جا رہے ہیں تاہم ماہرین کا کہنا ہے کہ یہ طریقہ کار توانائی کا ایک بہترین متبادل ہونے کے علاوہ ماحولیاتی آلودگی کو بھی کم کرنے میں مدد گار ثابت ہوگا۔

مزید : عالمی منظر