عدلیہ کو تعصب کے بغیر آزادانہ فیصلے کرنا چاہیں:بیرسٹر امجد ملک

عدلیہ کو تعصب کے بغیر آزادانہ فیصلے کرنا چاہیں:بیرسٹر امجد ملک

لاہور (خبر نگار خصوصی )برطانوی پاکستانی وکلاءکی تنظیم اور راچڈل لاءایسوسی ایشن کے صدر بیرسٹر امجد ملک نے کہا ہے کہ وکلاءسیاسی وابستگی سے بالا طاق ہوکرآئین و قانون کے محافظ ہیں اور  اسی کردار کی بدولت عوام ان کی آواز پر لبیک کہتے ہیں جس کا اظہار عدلیہ کی ٓزادی کی تحریک میں ہوا۔ وکلاملک کا واحد طبقہ  ہے جو جو انصاف کی فراہمی کیلئے بلا خوف کردارادا کرتا ہے ۔ لاہور ہائیکورٹ بار ایسو سی ایشن سے خطاب اور سینئر و جونئیر وکلا کے گروپوں سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے بار اور بنچ میں بہتر تعلقات، اختیارات اور انتخابی ضوابط میں اصلاحات پر زوردیا ۔اخراجات کنٹرول کرنے اور پیسے کی ریل پیل و نمائش پر پابندی لگانے کے فیصلے کو بھی خوش آئند قراردیا ۔ بار کے الیکشن میں وکلاءمیں اتحاد اور یگانت کو سراہاتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ برطانوی وکلاءپاکستانی کالے کوٹ کو عزت کی نگاہ سے دیکھتے ہیں ۔ وکلاء نے پاکستان کی وکلاءبرادری ، سول سوسائٹی اور دیگر سیاسی و سماجی تنظیموں کے تعاون سے عدلیہ کی آزادی کیلئے جو بے مثال تحریک چلائی برطانیہ کے وکلاءاس تحریک کی کامیابی پر آپ کو مبارکباد پیش کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تارکین وطن اگرچہ ملک سے دور ہیں لیکن ان کے دل پاکستان کے عوام کیلئے دھڑکتے ہیں اور ہم لوگوں نے وکلاءتحریک میں ہر طرح کا تعاون کیا۔ انہوں نے کہا کہ برطانیہ اور پاکستان کے وکلاءکے درمیان باہمی روابط کا قیام بہت ضروری ہے تاکہ دونوں ملکوں کے عوام کو درپیش مسائل اور ان کے حل کے متعلق کوئی نہ کوئی صورت تلاش کی جا سکے۔ انہوں نے کہا کہ عدلیہ کو آزادانہ اور کسی تعصب کے بغیر فیصلے کرنا چاہیں تاکہ جانبداری کا تاثر قائم نہ ہواور کسی بھی فریق کے ساتھ ناانصافی اور اسکی حق تلفی نہ ہو۔ جہاں تک سپریم کورٹ آف پاکستان کا از خود نوٹس لینے کا تعلق ہے انہوں نے کہا کہ یہ معاملات سیشن کورٹ/ہائیکورٹ تک محدود رہنے چاہیں تاکہ متاثرہ فریق کو اپیل کا حق مل سکے۔ لاہور ہائیکورٹ بار کے صدر عابد ساقی نے بیرسٹر امجد ملک کی وکلاءبحالی تحریک اور دونوں ملکوں کے وکلاءکے درمیان باہمی روابط/ رشتہ استوار رکھنے کی کوششوں کو سراہا اور بار میں آمد پر ان کا شکریہ ادا کیا۔

مزید : لاہور