واپڈا پن بجلی گھروں نے رواں ماہ 650 میگا واٹ اضافہ فی پیدوار مہیا کی

واپڈا پن بجلی گھروں نے رواں ماہ 650 میگا واٹ اضافہ فی پیدوار مہیا کی

                   لاہور(اے پی پی) واپڈا پن بجلی گھروں نے رواں ماہ میں اب تک 500 میگاواٹ سے لیکر 650 میگاواٹ تک اضافی پن بجلی قومی نظام کو مہےا کی جبکہ آئندہ ماہ دسمبرمےں400 سے 500 میگاواٹ اور جنوری 2015 ءمیں 300 سے 650 میگاواٹ اضافی پن بجلی قومی نظام کا حصہ بنے گی ۔ واپڈا ترجمان کے مطابق پن بجلی گھروں نے گزشتہ سال کے اسی عرصہ کے مقابلے میں زےادہ پن بجلی قومی نظام کو مہیا کی جبکہ دسمبر اور جنوری کے مہینوں میں بھی پن بجلی کی پیدا ہو گی ۔ انہوں نے بتاےا کہ پن بجلی کی یہ اضافی پیداوار ہائیڈل پاور سٹیشنوں کے موثر آپریشن ، دیکھ بھال اور منگلا جھیل میں پانی کی اضافی دستیابی کی وجہ سے ممکن ہوئی ہے ۔انہوں نے بتاےا کہ پن بجلی کی پیداوار میں یہ اضافہ اُس وقت ہوا جب ملک کو معاشی ترقی کے لئے توانائی کی اشد ضرورت ہے،بجلی کی اس اضافی دستیابی کی وجہ سے نہ صرف موسم سرما میں لوڈ شیڈنگ کم ہوگی بلکہ بجلی کے نرخوں میں بھی کمی آئے گی اور صارفین کو ریلیف ملے گا ۔واضح رہے کہ واپڈا کی پن بجلی پیدا کرنے کی مجموعی صلاحیت تقریباً 7ہزار میگاواٹ ہے جو کہ ملک میں کل پیداواری صلاحیت کا تقریباً ایک تہائی ہے۔پن بجلی توانائی کا سستا ، شفاف اور ماحول دوست ذریعہ ہے۔پاکستان میں بجلی کی پیداوار کا زیادہ تر انحصار تھرمل ذرائع پر ہے جبکہ پن بجلی کی شرح اس کے مقابلے میں خاصی کم ہے ۔نیشنل گرڈ کو مرحلہ وار کم لاگت پن بجلی کی شرح میں اضافے سے بجلی کے نرخوں میں کمی آئے گی اور صارفین کو ریلیف ملے گا۔ قومی نظام میں پن بجلی کے تناسب کو بڑھانے اور بجلی کی قیمتوں میں استحکام کیلئے واپڈا ترجیحی بنیاد پر کم لاگت پن بجلی پیدا کرنے کی حکمتِ عملی پر کام کر رہا ہے۔زیرتعمیر منصوبوں میں نیلم جہلم (969میگاواٹ)، گولن گول(106میگاواٹ)، تربیلا چوتھا توسیعی منصوبہ (1410 میگاواٹ)،داسوکا پہلا مرحلہ (2160میگاواٹ) اور دیامربھاشا ڈیم (4500 میگاواٹ)شامل ہیں۔7100 میگاواٹ کا بونجی ہائیڈرو پاور پراجیکٹ تعمیراتی کام کیلئے تیار ہے جبکہ 1320میگاواٹ کے تربیلا پانچویں توسیعی منصوبے کیلئے سٹڈی مکمل ہوچکی ہے ۔ اس پر تربیلا کے چوتھے توسیعی منصوبے کے ساتھ بیک وقت کام کا آغازہوگا۔

مزید : کامرس