روسی مسافر طیارہ تباہی، بم کس مسافر کی سیٹ تلے رکھا گیا تھا؟ تہلکہ خیز تفصیلات منظر عام پر آگئیں

روسی مسافر طیارہ تباہی، بم کس مسافر کی سیٹ تلے رکھا گیا تھا؟ تہلکہ خیز ...
روسی مسافر طیارہ تباہی، بم کس مسافر کی سیٹ تلے رکھا گیا تھا؟ تہلکہ خیز تفصیلات منظر عام پر آگئیں

  


قاہرہ(مانیٹرنگ ڈیسک) مصر کے ریگستانی علاقے سینائی میں گر کر تباہ ہونے والے روس کے مسافر طیارے کے متعلق اہم انکشافات سامنے آئے ہیں اور جہاز سے حاصل کردہ نمونوں کے فرانزک ٹیسٹ نے حادثے کی وجہ واضح کر دی ہے۔ ٹیسٹ کے نتائج میں بتایا گیا ہے کہ جہاز کے گرنے کا واقعہ دہشت گردی کا نتیجہ تھا اور بم جہاز کے اندر ایک 15 سالہ لڑکی کی سیٹ کے نیچے نصب کیا گیا تھا۔ برطانوی اخبار ڈیلی میل کی رپورٹ کے مطابق فرانزک ٹیسٹ کے نتائج میں بتایا گیا ہے کہ بم پرواز کی سیٹوں 30اے یا 31اے کے نیچے نصب تھا۔ 30اے سیٹ پر 15سالہ ماریہ لولیوا بیٹھی تھی جو اپنی والدہ کے ہمراہ مصر میں چھٹیاں گزار کر روس واپس آ رہی تھی جبکہ 31اے سیٹ پر ایک 77سالہ خاتون ندیزدا بشاکوف بیٹھی تھی۔

مزید جانئے: تباہ کیئے گئے روسی طیارے کا پائلٹ باغیوں کے قبضے میں ہونے کا انکشاف

سانحے کی تحقیقات کرنے والے ماہرین کا کہنا ہے کہ یہ دھماکہ ایک کلو ٹی این ٹی قوت کا تھا جس سے ظاہر ہوتا ہے کہ یہ دونوں خواتین بم پھٹنے کے فوراً بعد ہی جاں بحق ہو گئی ہوں گی جبکہ دیگر مسافر شدید زخمی ہوئے ہوں گے اور طیارے کے 31ہزار فٹ نیچے گرنے تک تکلیف دہ مراحل سے گزرے ہوں گے۔ ماہرین نے رپورٹ میں بتایا ہے کہ دھماکے کے بعد جہاز 6ہزار فٹ فی منٹ کی رفتار سے زمین پر گرا، جس سے ظاہر ہوتا ہے کہ جہاز کو زمین تک پہنچنے میں 5منٹ سے زائد وقت لگا۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ بم سیٹ کے نیچے اس خالی جگہ پر رکھا گیا ہو گا جہاں عموماً لائف جیکٹ رکھی جاتی ہے اور بم کی شدت جہاز کی 6قطاروں میں موجود تمام سیٹوں تک پہنچی ہو گی اور دھماکے سے جہاز کی دم میں بڑا سوراخ بن گیا ہو گا جس کی وجہ سے جہاز قلابازیاں کھاتا ہوا زمین پر گرا۔

مزید : بین الاقوامی