اگر آپ سمجھتے ہیں پیٹرن لاک لگا کر آپ کا فون محفوظ ہوجاتا ہے تو یہ انتہائی تشویشناک خبر ضرور پڑھ لیں

اگر آپ سمجھتے ہیں پیٹرن لاک لگا کر آپ کا فون محفوظ ہوجاتا ہے تو یہ انتہائی ...
اگر آپ سمجھتے ہیں پیٹرن لاک لگا کر آپ کا فون محفوظ ہوجاتا ہے تو یہ انتہائی تشویشناک خبر ضرور پڑھ لیں

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) اگر آپ اینڈرائیڈ فون کے صارف ہیں اور آپ کے فون میں اینڈرائیڈورژن 5.0سے پرانا ہے تو اسے فوری طور پر اپ ڈیٹ کر لیں ورنہ آپ کی تمام معلومات چوری ہو سکتی ہیں یا سکیورٹی ایجنسیاں نہایت آسانی سے آپ کی معلومات تک رسائی حاصل کر سکتی ہیں۔ نیویارک ڈسٹرکٹ کے اٹارنی آفس نے اپنی ایک دستاویز میں انکشاف کیا ہے کہ گوگل اپنے 5.0سے پرانے اینڈرائیڈ ورژنز کو نہایت آسانی سے ان لاک کرکے اس میں سے معلومات نکال سکتی ہے۔ دستاویز میں بتایا گیا ہے کہ اگر کبھی عدالت گوگل کو کسی صارف کی معلومات فراہم کرنے کا حکم دیتی ہے تو وہ فوری طور پر اس صارف کی معلومات نکال کر عدالت کو فراہم کر دے گی۔

مزید جانئے: ایسی چارجنگ کیبل آگئی کہ موبائل صارفین کی سب سے بڑی مشکل آسان کردی

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ 5.0یا اس سے نئے ورژنز کو ان لاک کرنا اتنا آسان نہیں ہے اور گوگل بھی یہ نہیں کر سکتی۔ اس لیے ان نئے ورژنز کے صارفین اس خدشے سے محفوظ ہیں۔ لیکن اگر ان صارفین کے فونز میں موجود آپشن (full disk encryption)آن نہ ہو توگوگل ان کے فونز تک بھی رسائی حاصل کر سکتی ہے اور فون کا پاس کوڈ ری سیٹ کر سکتی ہے، لیکن گوگل سرچ وارنٹ کے بغیر ایسا کبھی نہیں کرتی۔ گوگل کے علاوہ فرانزک ماہرین کے پاس بھی ایسے کئی سافٹ ویئرز ہیں جن کے ذریعے وہ ان پرانے ورژنز کے حامل اینڈرائیڈ فونز تک رسائی حاصل کر سکتے ہیں۔

اٹارنی آفس کی رپورٹ کے مطابق گوگل کی طرح ایپل بھی اپنے آپریٹنگ سسٹم آئی او ایس کے 8یا اس سے نئے ورژنز کے حامل آئی فونز کے پاس کوڈز کو بائی پاس نہیں کر سکتی لیکن اس سے پرانے ورژنز کو ایپل بھی ری سیٹ کر سکتی ہے۔ رپورٹ میں صارفین کو اس خطرے سے بچنے کا طریقہ بھی بتایا گیا ہے۔ اینڈرائیڈ صارفین اپنے موبائل فون میں سکیورٹی یا سٹوریج کے آپشن میں جائیں اور وہاں سے فل ڈسک انکرپشن(Full disk encryption) کو آن کر دیں۔ اسی طرح PIN اور پاس کوڈ استعمال کرنے کی صورت میں بھی ڈیٹا تک کسی کی رسائی ممکن نہیں رہتی۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -