ٹیکس دہندگان پر بوجھ ڈالنے کی بجائے دیگر شعبوں کو ٹیکس نیٹ میں لایاجائے

ٹیکس دہندگان پر بوجھ ڈالنے کی بجائے دیگر شعبوں کو ٹیکس نیٹ میں لایاجائے

لاہور(کامرس رپورٹر) لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری نے حکومت پر زور دیا ہے کہ موجودہ ٹیکس دہندگان پر مزید بوجھ ڈالنے اور بینکوں سے لین دین پر ودہولڈنگ ٹیکس عائد کرنے جیسے غیر منطقی اقدامات اٹھانے کے بجائے ٹیکس نیٹ سے باہر شعبوں کو ٹیکس نیٹ میں لائے ۔ تاجروں کے ایک وفد سے گفتگو کرتے ہوئے لاہور چیمبر کے صدر شیخ محمد ارشد نے کہا کہ جی ڈی پی میں زرعی شعبے کا حصہ اکیس فیصد لیکن ٹیکس محاصل میں حصہ صرف چھ فیصد کے لگ بھگ ہے۔ انہوں نے کہا کہ جب تک زراعت سمیت دیگر شعبوں کو ٹیکس نیٹ میں نہیں لایا جائے گا تب تک نہ تو حکومت مطلوبہ نتائج حاصل کرسکے گی اور تاجر بھی پریشان رہیں گے۔ انہوں نے حکومت پر زور دیا کہ وہ تاجر برادری کی مشاورت کے بغیر پالیسیاں تشکیل نہ دے کیونکہ اس سے مزید مسائل پیدا ہوتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تمام پالیسیاں صنعت و تجارت کے مفادات کو مد نظر رکھتے ہوئے تشکیل دی جائیں تاکہ حکومت اور تاجر برادری مل کر ملک کی ترقی و خوشحالی میں کردار ادا کرسکے۔ انہوں نے ودہولڈنگ ٹیکس کی مثال دیتے ہوئے کہا کہ اس مسئلے کی وجہ سے تاجر برادری شدید پریشان ہے لہذا حکومت کو اس کا جلد سے جلد کوئی قابل قبول حل تلاش کرنا ہوگا۔

مزید : کامرس