واسا نے شالامار ٹاؤن کی بڑ ی سکیموں پر انفراسٹرکچر چارجز عائد کر دیے

واسا نے شالامار ٹاؤن کی بڑ ی سکیموں پر انفراسٹرکچر چارجز عائد کر دیے

  

لاہور(جاوید اقبال) واسا نے شالا مار ٹاؤن میں واقع بڑی پرائیویٹ ہاؤسنگ سکیموں پر انفرا سٹرکچر سیوریج اینڈ واٹر سپلائی چارجز عائد کر دیئے ہیں چارجز کا ریٹ87ہزار400سو روپے فی کنال کے حساب سے عائد کیا گیا ہے جس کی واسا اتھارٹی نے منظوری دیتے ہوئے فائل نوٹیفیکیشن کے لئے ڈائریکٹر ایڈمن کے حوالے کر دی ہے کیس منظوری کے لئے شالامار ٹاؤن کے ڈائریکٹر اور ایکسین نے واسا اتھارٹی کو پیش کیا جس میں سفارش کی گئی تھی کہ ٹاؤن میں واقع پرائیویٹ ہاؤسنگ سکیمیں واسا کا ٹرنک سیوریج واٹر سپلائی استعمال کر رہی ہیں اور اسی کے عوض پرائیویٹ سکیموں نے چارجز ادا نہیں کئے لہٰذا ان پر 4370روپے فی مرلہ کے حساب سے انفارسٹرکچر چارجز عائد کئے جائیں ذرائع نے بتایا ہے کہ واسا اتھارٹی نے اسی سفارشات کو باقاعدہ طور پر منظور کر لیا ہے اور نوٹیفیکیشن کے لئے فائل ڈائریکٹر ایڈمن رانا ٹکا کے حوالے کر دی ہے۔ذرائع نے بتایا ہے کہ ابتدائی طور پر مذکورہ ٹاؤن کی 4بڑی پرائیویٹ سکیموں کو چارجز نیٹ میں لانا ظاہر کیا گیا ہے جن میں انگوری سکیم ،باغبانپورہ، گلشن شالیمار، عالیہ ٹاؤن اور حسین ٹاؤن شامل ہیں ۔ اس حوالے سے ڈائریکٹر ایڈمن واسا رانا ٹکا نے کہا کہ تمام پرائیویٹ ہاؤسنگ سکمیوں کو 87400فی کنال کے حساب سے چارجز ڈالیں گے ۔ڈائریکٹر ایڈمن نے کہا کہ یہ چارجز پرائیویٹ سکیم کے ہر رہائشی کو ادا کرنا ہونگے جو ایک ہی مرتبہ ادا کرنا پڑیں گے عدم ادائیگی پر کنکشن کاٹ دیا جائے گا اور بحالی اسی وقت ہو گی جب وہ چار ہزار ادا کریں رسید مع کرائیں گے

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -